Sunday , January 21 2018
Home / کھیل کی خبریں / سائنا اور سندھو سے بیڈمنٹن میں امیدیں

سائنا اور سندھو سے بیڈمنٹن میں امیدیں

انچیان ۔ 19 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) ایشین گیمس کے 17 ویں ایڈیشن میں ہندوستانی بیڈمنٹن کو 28 برسوں سے میڈل کے حصول کا انتظار ہے اور اب سنگلس میں خاتون زمرہ کی نمبر ایک کھلاڑی سائنا نہوال اور پی وی سندھو کے علاوہ مرد زمرہ میں پروپلی کیشپ سے تمام تر امیدیں وابستہ ہوچکی ہیں۔ ہندوستان کو آخری مرتبہ ایشین گیمس میں بیڈمنٹن کے زمرہ کا میڈل1986 میں

انچیان ۔ 19 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) ایشین گیمس کے 17 ویں ایڈیشن میں ہندوستانی بیڈمنٹن کو 28 برسوں سے میڈل کے حصول کا انتظار ہے اور اب سنگلس میں خاتون زمرہ کی نمبر ایک کھلاڑی سائنا نہوال اور پی وی سندھو کے علاوہ مرد زمرہ میں پروپلی کیشپ سے تمام تر امیدیں وابستہ ہوچکی ہیں۔ ہندوستان کو آخری مرتبہ ایشین گیمس میں بیڈمنٹن کے زمرہ کا میڈل1986 میں برونز کی شکل میں حاصل ہوا تھا۔ 1966میں جب پہلی مرتبہ بیڈمنٹن کو ایشین گیمس میں شامل کیا گیا تھا تب سے ہندوستان نے صرف 7 برونز میڈل حاصل کئے ہیں اور آخری مرتبہ ہندوستان کیلئے میڈل حاصل کرنے والے کھلاڑی سید مودی رہے۔ قومی کوچ پولیلا گوپی چند کی ٹریننگ میں ہندوستانی کھلاڑی کامیابی کیلئے پرعزم ہیں۔ لندن اولمپکس میں ہندوستان کیلئے سائنا نہوال نے برونز میڈل حاصل کیا تھا لیکن کوپن ہیگن میں منعقدہ ورلڈ چمپیئن شپ میں انہیں کوارٹر فائنل میں شکست برداشت کرنی پڑی جبکہ گوپی چند کے ساتھ علحدگی کا تنازعہ بھی ان کے ساتھ منسلک ہے۔

سندھو ایک اور ابھرتی حیدرآبادی کھلاڑی ہیں جن کا عالمی درجہ بندی میں 10 واں مقام ہیں لیکن فام کے اعتبار سے فی الحال سندھو متواتر دو برونز میڈل ورلڈ چمپیئن شپ میں حاصل کرتے ہوئے کافی پرعزم ہیں۔ علاوہ ازیں 19 سالہ سندھو نے ایشین چمپیئن شپ جوکہ اپریل میں منعقد ہوئی ہے، یہاں برونز میڈل حاصل کرنے کے علاوہ اوبیر کپ میں گولڈ میڈل بھی حاصل کیا ہے۔ کامن ویلتھ گیمس میں سندھو گولڈ میڈل کے حصول کیلئے کافی پرعزم تھیں لیکن انہیں گلاسگو میں صرف برونز میڈل پر اکتفا کرنا پڑا ہے۔ سائنا نہوال پر توجہ اس لئے بھی مرکوز ہوچکی ہے کیونکہ وہ ناقص فام سے چھٹکارا پانے کیلئے ویمل کمار کی ٹریننگ حاصل کی ہے تاکہ ایشین گیمس میں بہتر مظاہرہ کیا جاسکے۔ ڈبلس میں جوالہ گٹہ کی دستبرداری کے بعد اشونی اور سندھو نے ڈبلس میں بھی جوڑی بنائی ہے۔ مرد زمرہ کے سنگلس میں ہندوستان کی تمام امیدیں پروپلی کیشپ سے وابستہ ہیں۔

TOPPOPULARRECENT