Wednesday , July 18 2018
Home / Top Stories / سائنس کی طالبات کے لیے فی کس 2.5 لاکھ روپئے اسکالر شپ

سائنس کی طالبات کے لیے فی کس 2.5 لاکھ روپئے اسکالر شپ

حیدرآباد ۔ 10 ۔ جولائی : ( سیاست نیوز ) : سائنس شعبہ سے اعلیٰ تعلیم حاصل کرنے والے طلبہ کے لیے ویسے تو کئی مواقع رہتے ہیں لیکن معاشی اعتبار سے پسماندہ طلبہ کے لیے سائنس کے شعبے میں اعلیٰ تعلیم حاصل کرنا مشکل ہوتا ہے لیکن مارکٹ میں کئی ایک اسکالر شپس موجود ہیں ان میں ایک اسکالر شپ لا اوریال کی جانب سے بھی فراہم کی جارہی ہے جو کہ 50 اہل لڑکیوں کو فی کس 2.5 لاکھ روپئے ہوگی ۔ لااوریال انڈیا کمپنی کی جانب سے ’دنیا کو سائنس کی ضرورت ہے اور سائنس کو خواتین کی ضرورت ہے ‘ کے مقصد کے تحت یہ اسکالر شپ ایسی طالبات کو فراہم کی جارہی ہے جو کہ اپنی 12 ویں جماعت کی تعلیم مکمل کرلی ہو اور وہ سائنس کے کسی شعبہ سے گریجویشن کی تعلیم کی خواہاں ہو تو ایسی طالبہ کو 2.5 لاکھ روپئے کی اسکالر شپ فراہم کی جارہی ہے جو معاشی اعتبار سے پسماندہ ہو ۔ اس ضمن میں اظہار خیال کرتے ہوئے عوامی امور کی صدر سنہال چیٹنانی نے کہا کہ کمپنی کی جانب سے اسکالر شپ کی فراہمی کا یہ 16 واں سال ہے اور اس سائنس کے شعبے میں خواتین کی اہمیت جانتی ہے اور اس کے پیش نظر ایسی طالبات کی معاشی تعاون سے ہمت افزائی کی جارہی ہے جو کہ سائنس کے شعبے میں اپنی صلاحیتوں سے نام پیدا کرناچاہتی ہیں ۔ تاہم انہیں معاشی مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔ 2003 میں مذکورہ اسکالر شپ کا آغاز ہوا ہے اور تاحال ہندوستان بھر سے 300 سے زائد طالبات کو اسکالر شپ فراہم کی گئی ہیں ۔ اسکالر شپ کے لیے اہلیت : رواں تعلیمی سال مارچ 2018 کو جن طالبات نے 12 جماعت کا امتحان کامیاب کیا ہے اور ان کے نمبرات کا فیصد 85 سے زیادہ ہو ۔ 19 سال سے زیادہ عمر نہ ہو جو کہ سائنس ، میڈیسن ، انجینئرنگ ، انفارمیشن ٹکنالوجی ، فارمیسی ، بائیو ٹکنالوجی اور بی ایس اے کے دیگر مضامین سے اعلیٰ تعلیم کی خواہش مند ہوں وہ اس اسکالر شپ کے لیے اہل ہوں گی ۔ ویب سائٹ سے فارم ڈاون لوڈ کرتے ہوئے متعلقہ پتہ پر پوسٹ کیا جاسکتا ہے جب کہ فارم داخل کرنے کی آخری تاریخ 16 جولائی ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT