Thursday , December 14 2017
Home / جرائم و حادثات / سابقہ گرل فرینڈ کومحروس رکھ کر جنسی استحصال

سابقہ گرل فرینڈ کومحروس رکھ کر جنسی استحصال

حیدرآباد ۔ /22 ڈسمبر (سیاست نیوز) ہمایوں نگر پولیس نے کہا سافٹ ویئر کمپنی کے ملازم کو اپنی سابقہ گرل فرینڈ کو غیر قانونی طورپر محروس رکھنے اور اس کا جنسی استحصال کرنے کے الزام میں حیدرآباد سٹی پولیس کی شی ٹیم نے گرفتار کرلیا۔ شی ٹیم نے متاثرہ لڑکی کو بھی اس کے چنگل سے بچالیا ۔  26 سالہ سید عماد حسن ساکن الحسنات کالونی ٹولی چوکی جس کا تعلق علی گڑھ اترپردیش سے ہے نے اپنی سابقہ گرل فرینڈ جو سافٹ ویئر کمپنی کی ملازمہ تھی کو اپنے فلیٹ میں غیرقانونی طور پر محروس رکھ کر اس کا جنسی استحصال کررہا تھا ۔ جوائنٹ کمشنر آف پولیس ڈیٹکٹیو ڈپارٹمنٹ مسٹر ٹی پربھاکر راؤ نے بتایا کہ عماد حسن اور اس کی سابقہ گرل فرینڈ جس کا تعلق کرناٹک سے ہے سابق میں ایک ہی سافٹ ویئر کمپنی میں ملازمت کیا کرتے تھے اور عماد اس سے شادی کیلئے اصرار کررہا تھا ۔  لڑکی کے شادی سے انکار پر انتقامی کارروائی کے تحت   عماد نے لڑکی جو دوبئی میں ملازمت کررہی تھی حیدرآباد لوٹنے پر مجبور کردیا ۔ ملزم نے لڑکی کو حیدرآباد پہونچنے پر اپنے فلیٹ منتقل کیا جہاں پر اسے جان سے مارنے کی دھمکی دیتے ہوئے اسے پٹرول اور دیگر اشیاء دکھایا ۔ عماد نے مبینہ طور پر شادی کیلئے دوبارہ اصرار کیا لیکن لڑکی کے مسلسل انکار پر اس کا جنسی استحصال ہی نہیں بلکہ اسے مارپیٹ بھی کی ۔ لڑکی کو ملزم نے بیت الخلاء میں محروس رکھ دیا تھا اور اس کے تمام موبائیل فونس اور سوشیل نیٹ ورکنگ ویب سائیٹس کے پاسورڈ حاصل کرلئے تھے ۔ متاثرہ لڑکی نے بالآخر اپنے ایک ساتھی کو عماد کی اس حرکت سے واقف کروایا اور بعد ازاں لڑکی کے بھائی کو اس سلسلے میں واقف کروایا گیا ۔ متاثرہ لڑکی کے بھائی سندیپ نے سنٹرل کرائم اسٹیشن کی شی ٹیم سے شکایت کی جس پر اسسٹنٹ کمشنر پولیس شریمتی ڈی کویتا نے سب انسپکٹر لکشمن پر مشتمل ایک خصوصی ٹیم روانہ کی جس نے ٹولی چوکی میں واقع عماد حسن کے فلیٹ پر دھاوا کرتے ہوئے لڑکی کو اس کے چنگل سے بچالیا اور ملزم کو گرفتار کرکے اسے آج عدالت میں پیش کردیا گیا ۔ شی ٹیم نے گرفتار ملزم کے خلاف عصمت ریزی ، نربھئے ایکٹ اور دیگر دفعات کے تحت مقدمہ درج کیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT