سابق آئی اے ایس آفیسر کے اقدام قتل میں ملوث 5افراد گرفتار

حیدرآباد۔/10 اپریل، ( سیاست نیوز) جوبلی ہلز پولیس نے سابق آئی اے ایس عہدیدار کے اقدام قتل میں ملوث پانچ افراد بشمول ایک خاتون جو عہدیدار کی بھتیجی ہے کو گرفتار کرلیا۔ ڈپٹی کمشنر پولیس ویسٹ زون مسٹر اے آر سرینواس نے بتایا کہ منجولا نے سابق آئی اے ایس عہدیدار پی دیا چاری کے ساتھ اپنے آبائی مقام گنٹور اور پٹن چیرو میں جائیداد خریدی تھی لیکن دونوں کے درمیان تنازعہ پیدا ہوگیا تھا۔ منجولا اور اس کے بھائی کروناکر نے آپس میں اس مسئلہ کی یکسوئی کی کوشش کی لیکن وہ ناکام رہے۔ کروناکر نے سابق آئی اے ایس عہدیدار کو مسئلہ کی یکسوئی نہ کرنے پر سنگین نتائج کا انتباہ دیا تھا۔ منصوبہ کے تحت منجولا اور کروناکر نے پی دیا چاری کے قتل کا منصوبہ تیار کیا جس کے لئے اپنے بزنس پارٹنر وینکٹیشور راؤ جس کا تعلق وجئے واڑہ سے ہے تبادلہ خیال کیا اور اپنے چچا کو نشانہ بنانے پر معقول رقم کا وعدہ کیا اور بطور پیشگی 15 ہزار روپئے بھی ادا کئے۔ گزشتہ ماہ وینکٹیشورراؤ اور کروناکر وجئے واڑہ سے حیدرآباد پہنچ کر نریش نامی شخص سے رابطہ قائم کیا اور سابق آئی ای ایس عہدیدار کی تصویریں حوالے کی اور اسے نشانہ بنانے کا کنٹراکٹ دیا۔ 3 اپریل کو نریش اور اس کے ساتھ اشوک ، ساگر، ایپا حیدرآباد پہنچ کر کونڈا پور میں واقع ہوٹل منروا میں کمرہ کرایہ پر حاصل کیا اور حملہ کی غرض سے ایک کرکٹ کی وکٹ بھی خریدا۔ 5 اپریل کو مذکورہ حملہ آوروں نے پی دیا چاری کو اسوقت نشانہ بنایا جب وہ صبح کی چہل قدمی کیلئے اپنے مکان سے باہر گیا تھا۔اس حملہ میں دیا چاری کے سر پر گہرا زخم آیا تھا۔ پولیس نے گرفتار ملزمین کے قبضہ سے حملہ میں استعمال کی گئی وکٹ کو برآمد کرتے ہوئے انہیں عدالت میں پیش کیا اور بعد ازاں انہیں جیل منتقل کردیا۔

TOPPOPULARRECENT