Sunday , September 23 2018
Home / شہر کی خبریں / سابق ریاست حیدرآباد میں دلتوں پر اعلیٰ ذاتوں کا غلبہ!

سابق ریاست حیدرآباد میں دلتوں پر اعلیٰ ذاتوں کا غلبہ!

حیدرآباد۔/17 جنوری (سیاست نیوز) وزیر امور مقننہ ڈاکٹر شیلجہ ناتھ کی جانب سے سابق ریاست حیدرآباد میں دلتوں پر اعلیٰ ذاتوں کے غلبہ کو اجاگر کرنے کی کوشش پر اعلیٰ ذاتوں سے تعلق رکھنے والے ارکان اسمبلی نے سیاسی وابستگیوں سے بالاتر ہوکر سخت ردعمل ظاہر کیا۔ ایوان اسمبلی میں آج تلنگانہ مسودہ بل پر مباحث میں حصہ لیتے ہوئے ڈاکٹر شیلجہ ن

حیدرآباد۔/17 جنوری (سیاست نیوز) وزیر امور مقننہ ڈاکٹر شیلجہ ناتھ کی جانب سے سابق ریاست حیدرآباد میں دلتوں پر اعلیٰ ذاتوں کے غلبہ کو اجاگر کرنے کی کوشش پر اعلیٰ ذاتوں سے تعلق رکھنے والے ارکان اسمبلی نے سیاسی وابستگیوں سے بالاتر ہوکر سخت ردعمل ظاہر کیا۔ ایوان اسمبلی میں آج تلنگانہ مسودہ بل پر مباحث میں حصہ لیتے ہوئے ڈاکٹر شیلجہ ناتھ نے الزام عائد کیا کہ سیاسی قائدین نے اشتعال انگیز تقاریر کرتے ہوئے تلنگانہ ایجی ٹیشن میں معصوم دلت طلبۂ کو رجھانے کا الزام عائد کیا۔

انہوں نے یہ واضح کرنے کی بھی کوشش کی کہ کس طرح دلتوں کو دورا، پٹیل اور پٹواریوں نے جو اعلیٰ ذات سے تعلق رکھتے ہیں کچلا جاتا رہا۔ وزیر کی جانب سے ’دورا‘ لفظ استعمال کرنے پر سخت اعتراض کرتے ہوئے تلنگانہ خطہ سے تعلق رکھنے والے کانگریس رکن اسمبلی مسٹر رام ریڈی دامودھر ریڈی نے کہا کہ وہ اتفاق سے اعلیٰ ذات کے گھرانہ میں پیدا ہوئے ہیں اور لوگ انہیں عمومی طور پر ’دورا‘ پکارتے ہیں۔ ان کے حلقہ اسمبلی میں درج فہرست اقوام اور درج فہرست قبائیل بھی انہیں ’انا‘ (بھائی) پکارتے ہیں اور وہ سماج کے تمام طبقات کے ساتھ مساویانہ سلوک کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ فرد کی ذات اہمیت نہیں رکھتی بلکہ یہ اہم ہوتا ہے کہ وہ کس طرح برتاؤ کرتا ہے اور اس کا کردار کیسا ہے۔

تلنگانہ کے تلگو دیشم رکن اسمبلی مسٹر ریونت ریڈی نے کہا کہ وزیر کو یہ بات ذہن نشین رکھنا چاہئے کہ ضلع اننت پور میں دلتوں کو اعلیٰ ذات کے کاکنٹلہ دورا دبائے رکھتے ہیں۔ انہوں نے حیرت کا اظہار کرتے ہوئے استفسار کیا کہ آیا رائلسیما خطہ میں خاص کر پلی ویندولہ اور تاڑی پتری میں جمہوریت بھی ہے؟ ریمارکس پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے ڈاکٹر شیلجہ ناتھ نے کہا کہ وہ دلتوں پر اعلیٰ ذاتوں کے غلبہ کو اجاگر کرنے میں کامیاب ہوگئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT