Tuesday , December 12 2017
Home / شہر کی خبریں / سابق وزیر پرساد کمار ٹی آر ایس میں شامل

سابق وزیر پرساد کمار ٹی آر ایس میں شامل

بلدی انتخابات سے قبل کانگریس کو ایک اور دھکا
حیدرآباد /17 دسمبر (سیاست نیوز) تلنگانہ پردیش کانگریس کو گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن کے انتخابات سے قبل ایک اور جھٹکا لگا۔ ضلع رنگا ریڈی سے تعلق رکھنے والے سابق ریاستی وزیر جی پرساد کمار نے کانگریس سے مستعفی ہوکر ٹی آر ایس میں شمولیت کا اعلان کیا ہے۔ جی ایچ ایم سی کے انتخابات کے لئے کانگریس پارٹی حکمت عملی تیار کر رہی ہے، جب کہ اس کے قائدین پارٹی سے مستعفی ہو رہے ہیں۔ صدر گریٹر حیدرآباد سٹی کانگریس ڈی ناگیندر کے پارٹی چھوڑنے کا طوفان ابھی تھما ہی تھا کہ جی پرساد کمار نے بھی پارٹی چھوڑنے کا اعلان کردیا۔ واضح رہے کہ جی پرساد کمار کرن کمار ریڈی کی کابینہ میں وزیر ٹیکسٹائل تھے۔ ڈاکٹر شنکر راؤ کو کابینہ سے برطرف کرنے کے بعد کرن کمار ریڈی نے انھیں اپنی کابینہ میں شامل کیا تھا۔ انھوں نے کانگریس پر الزام عائد کیا ہے کہ پارٹی قیادت نے ان سے مشورہ کئے بغیر سابق وزیر کے چندر شیکھر راؤ کو مقامی اداروں کے کونسل انتخابات میں پارٹی کا امیدوار بنایا، جس سے انھیں کافی تکلیف ہوئی، جب کہ ہم نے پارٹی کے استحکام کے لئے خود کو وقف کردیا تھا، لیکن پارٹی نے ان کی خدمات کو فراموش کردیا۔ انھوں نے بتایا کہ اپنے حامیوں سے مشاورت کے بعد ہی انھوں نے ٹی آر ایس میں شمولیت اختیار کی ہے۔ انھوں نے کہا کہ ریاستی وزیر کے ٹی آر ان کے اچھے دوست ہیں اور چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر نے انھیں ٹیلیفون کرکے ٹی آر ایس میں شامل ہونے کی ترغیب دی تھی۔ ذرائع نے بتایا کہ ضلع رنگا ریڈی میں ایم ایل سی کی دوسری نشست پر قبضہ کرنے کے لئے ٹی آر ایس کے پاس عددی طاقت کم ہے، لہذا دونوں نشستوں پر قبضہ کرنے کے لئے ٹی آر ایس نے جی پرساد کمار سے ربط پیدا کیا اور اب وہ کانگریس کے 30 ایم پی ٹی سیز اور دیگر قائدین کے ساتھ ٹی آر ایس میں شامل ہو رہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT