Monday , June 25 2018
Home / شہر کی خبریں / سابق ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ پولیس کی دفتر میں خودکشی

سابق ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ پولیس کی دفتر میں خودکشی

انٹلی جنس سیکوریٹی ونگ کے دفتر میں واقعہ پر سنسنی ، خراب صحت پر انتہائی اقدام

انٹلی جنس سیکوریٹی ونگ کے دفتر میں واقعہ پر سنسنی ، خراب صحت پر انتہائی اقدام
حیدرآباد ۔ /8اگست (سیاست نیوز) خیریت آباد میں واقع انٹلیجنس سکیورٹی ونگ کے دفتر میں آج اس وقت سنسنی پھیل گئی جب خرابی صحت اور ذہنی دباؤ سے دوچار سابق ڈپٹی سپرنٹنڈنٹ آف پولیس نے اپنی سرویس پستول سے گولی مارکر خودکشی کرلی ۔ کے سریش راؤ سابق میں تلنگانہ کے چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کے سکیورٹی آفیسر کی حیثیت سے خدمات انجام دیئے تھے ۔ پولیس ذرائع نے بتایا کہ آج شام 4.40 پر ڈی ایس پی سریش راؤ نے اپنے ماتحتوں سے دفتر میں ملاقات کی اور بعد ازاں اپنے چیمبر کے دروازے بند کرلئے اور کچھ ہی دیر میں وہاں کے عملے نے ایک گولی کی آواز سنی ۔ انٹلیجنس سکیورٹی عملہ نے سریش راؤ کو خون میں لت پت پایا اور اس کے ہاتھ میں سرویس پستول بھی پائی گئی ۔ سریش راؤ کو فوری نظام انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسنس (نمس ہاسپٹل) منتقل کیا گیا جہاں پر ڈاکٹروں نے اسے مردہ قرار دیا ۔ متوفی عہدیدار کے خاندانی ذ رائع کے بموجب وہ گزشتہ چند عرصے سے علیل تھا اور جاریہ سال جولائی میں ملک پیٹ میں واقع یشودھا ہاسپٹل میں علاج کیلئے شریک کیا گیا تھا وہ ذیابطیس اور دیگر بیماریوں سے پریشان تھا ۔ متوفی ڈی ایس پی کا تعلق یلاکرتی منڈل ضلع کریم نگر سے ہے اور وہ رامنتاپور کا ساکن تھا جبکہ اسے دو لڑکے ہے جو سی بی آئی ٹی اور انٹرمیڈیٹ کی تعلیم حاصل کررہے ہیں ۔ ڈپٹی کمشنر پولیس ویسٹ زون نے اس واقعہ سے متعلق تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ سریش راؤ نے انتہائی قریب سے خود کو گولی مارلی جس کے سبب جائے حادثہ پر ہی موت واقع ہوگئی ۔ پنجہ گٹہ پولیس نے ڈی ایس پی کی نعش کو گاندھی ہاسپٹل کے مردہ خانہ منتقل کیا جہاں پر اس کا پوسٹ مارٹم کیا گیا اور ریاستی وزیر داخلہ مسٹر نائینی نرسمہا ریڈی نے گاندھی ہاسپٹل پہونچ کر متوفی عہدیدار کے ارکان خاندان کو پرسہ دیا ۔ سریش کا تعلق اے پی ایس پی کے 1991 ء کے سب انسپکٹر بیاچ سے تھا اور وہ گزشتہ 10 سال سے انٹلیجنس سکیورٹی ونگ سے وابستہ ہے ۔ واضح رہے کہ ریاستی پولیس کا یہ شعبہ چیف منسٹر اور دیگر اہم وزراء و ارکان اسمبلی کو سکیورٹی فراہم کرتا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT