Monday , November 20 2017
Home / جرائم و حادثات / سارق کے منگل سوتر نگل جانے سے پولیس کے ساتھ ڈاکٹرس پریشان

سارق کے منگل سوتر نگل جانے سے پولیس کے ساتھ ڈاکٹرس پریشان

حیدرآباد 18 اگست (سیاست نیوز)سارقوں اور رہزنوں سے پولیس کو پریشان ہوتے ہوئے دیکھا گیا تاہم پولیس کے ساتھ ساتھ اب ڈاکٹرس بھی ایک سارق کی سرگرمی سے پریشان ہیں کیونکہ ان پولیس والوں کو اور علاج کرنے والے ڈاکٹرس کو سارق کی صحت سے زیادہ اس کی رفع حاجت پر نظر رکھنا ہوگا ۔ وہ دوائی بھلے ہی کسی بھی وقت پر لے نہ لے لیکن رفع حاجت سے کب فارغ ہوگا اس پر نظریں جمائی رکھنی ہوگی ۔ اس طرح کے مسائل سے ان دنوں چلکل گوڑہ پولیس اور ڈاکٹرس پریشان ہیں ۔ پولیس نے کارروائی میں ایک ایسے سارق کو گرفتار کرلیا جس نے مسروقہ منگل سوتر نگل لیا اور جب پولیس نے ڈاکٹرس سے سارق کو رجوع کیا تو ڈاکٹرس نے آپریشن سے فوری طور پر انکارکردیا ۔ پولیس کو مشورہ دیا کہ وہ اس پر نظر رکھیں چونکہ منگل سوتر رفع حاجت ہی کے ذریعہ اس کے پیٹ سے باہر آسکتا ہے اور اس کیلئے 8 تا 10 دن بھی درکار ہوسکتے ہیں ۔ اب پولیس کے لئے سارق کا اجابت سے فارغ ہونا کافی اہمیت کا حامل بن گیا ہے ۔ ذرائع کے مطابق 22 سالہ ویکاس جو چلکل گوڑہ پولیس کے ہاتھ لگا اس نے چلگل گوڑہ علاقہ کی ساکن ایک خاتون پرمیلا کے گلے سے منگل سوتر کا سرقہ کرلیا ۔ شنکریہ اور پرمیلا دونوں صبح چہل قدمی کیلئے نکلے تھے ۔ ویکاس کی نظر اس خاتون پر پڑی اور اس نے منگل سوتر جو 4 تولہ کا بتایا گیا ہے خاتون کے گلے سے چھین لیا ۔ خاتون کی شکایت پر پولیس چلکل گوڑہ نے رات دیر گئے ویکاس کی نشاندہی کرتے ہوئے اسے حراست میں لے لیا ۔ پولیس کے خوف سے اس سارق نے منگل سوتر نگل لیا جس کو ہاسپٹل منتقل کرنے کے بعد اس کا ایکسرے نکالا گیا تاہم ڈاکٹرس نے آپریشن سے انکار کردیا ۔ ڈاکٹرس چاہتے ہیں کہ بیمار شخص جلد صحت یاب ہوجائے اور پولیس چاہتی ہے کہ سارق کا پیٹ صاف ہوجائے ۔ پولیس اور ڈاکٹرس سارق پر خصوصی نگرانی رکھے ہوئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT