Friday , January 19 2018
Home / Top Stories / سارک خطہ میں پولیو سے پاک ماحول پیدا کرنے ہندوستان کی پیشکش

سارک خطہ میں پولیو سے پاک ماحول پیدا کرنے ہندوستان کی پیشکش

نئی دہلی 24 اپریل (سیاست ڈاٹ کام ) جنوبی ایشیاء کو پولیو سے پاک خطہ بنانے کے مقصد سے ہندوستان نے سارک ممالک سے کہا ہے کہ وہ پولیو کو ختم کرنے کیلئے ٹیکنیکل مشنس کی حمایت کی پیشکش کرتا ہے۔ وزیر صحت نے آج لوک سبھا کو مطلع کیا کہ سارک ملکوں میں پولیو کے خاتمہ کیلئے ہندوستان اپنی جانب سے ہر ممکنہ تعاون کرے گا ۔ وزیر صحت جے پی نادا نے کہا کہ

نئی دہلی 24 اپریل (سیاست ڈاٹ کام ) جنوبی ایشیاء کو پولیو سے پاک خطہ بنانے کے مقصد سے ہندوستان نے سارک ممالک سے کہا ہے کہ وہ پولیو کو ختم کرنے کیلئے ٹیکنیکل مشنس کی حمایت کی پیشکش کرتا ہے۔ وزیر صحت نے آج لوک سبھا کو مطلع کیا کہ سارک ملکوں میں پولیو کے خاتمہ کیلئے ہندوستان اپنی جانب سے ہر ممکنہ تعاون کرے گا ۔ وزیر صحت جے پی نادا نے کہا کہ سارک ملکوں کے وزرائے صحت کی 8 اپریل کو کانفرنس منعقد ہوئی اس میں ٹی بی اور ایچ آئی وی / ایڈس کیلئے سارک سوپرا نیشنل ریفرنس لیباریٹری کے قیام کے بشمول سارک ممالک میں صحت کے تعاون اقدامات کو مستحکم بنانے پر زور دیا گیا ۔ سارک خطہ کو پولیو سے پاک بنانے کے مقصد کے تحت ہندوستان نے تمام سارک ممالک سے ٹکنیکل مشنس شروع کرنے کی خواہش کی ہے اور ان ٹیکنیکل مشنس کیلئے ہندوستان اپنی جانب سے ہر ممکنہ مدد کرے گا۔

انہوں نے لوک سبھا میں تحریری جواب دیتے ہوئے کہا کہ وزرائے صحت کے اجلاس کے دوران جو کچھ روداد پیش کی گئی اس کے مطابق سارک ملکوں میں صحت خدمات پر توجہ دی جائے گی۔ ان وزرائے صحت نے دہلی اعلامیہ کو بھی منظور کیا ہے جس میں عوامی صحت کو درپیش چینلجس سے نمٹنے کے اقدامات شامل ہیں۔ ایڈس جیسے وبائی مرض کو ختم کرنے کے مقصد سے اس خطہ میں 2030 تک تیزی سے مہم چلائی جائے گی ۔ سارک ملکوں نے اپنے اعلامیہ میں یہ بھی کہا کہ پولیو کو ختم کرنے کیلئے سستی دوائیں ایجاد کی جائیں اور ایسے ٹیکے ایجاد کئے جائیں جس کی مدد سے پولیو کا خاتمہ ہوسکے ۔ وزیر صحت نے کہا کہ ٹی بی کی دوائیں اور اس کی تشخیص کیلئے سستے اور بہتر آلات فراہم کئے جانے چاہئے ۔ ہر عام آدمی کو دوا حاصل کرنے کے قابل بنایا جانا چاہئے ۔ عالمی صحت نگہداشت کے تحت ہیلت کیئر کو فروغ دینے کی ضرورت ہے ۔ سارک ملکوں نے عالمی تجارتی تنظیم معاہدہ کے تحت ایسی دوائیں بنانے کی جانب توجہ دلائی جو آسانی سے دستیاب ہو۔ ان وزرائے صحت نے یہ بھی اتفاق کیا کہ باہمی اور علاقائی تجارت کو فروغ دینے کیلئے معاہدے کئے جائیں اور یہ معاہدے صحت عامہ کے مفاد میں ہونے چاہئے ۔ پیشہ وارانہ اداروں کے درمیان باہمی تعاون کی ترغیب دی جائے ۔ ادویات ‘نرسنگ اور دیگر طبی ضروریات کی تکمیل کیلئے بھی اقدامات ناگزیر ہیں۔ اس اعلامیہ میں رکن ممالک سے کہا گیا ہے کہ وہ علاقائی حکمت عملی کے تحت ایچ آئی وی اور ایڈس پر قابو پانے کے اقدامات کریں۔ سارک ممالک ایک دوسرے کے تجربات میں حصہ داری بنے ۔ 2030 تک ایڈس کے خاتمہ کا عہد کرتے ہوئے ایچ آئی وی انفکشن کے خطرات کو کم کیا جائے ۔ تمباکو نوشی پر قابو پانے کیلئے تنظیم عالمی صحت کے بنائے گئے اصولوں پر عمل کرنے کی ضرورت ہے ۔

TOPPOPULARRECENT