Wednesday , June 20 2018
Home / شہر کی خبریں / سازش کے تحت زیر دریافت مسلم نوجوانوں کا قتل : ورا ورا راؤ

سازش کے تحت زیر دریافت مسلم نوجوانوں کا قتل : ورا ورا راؤ

چندر شیکھر راؤ ‘ مرکز اور آر ایس ایس کو خوش کرنے کوشاں ‘ مسلمان جمہوری انداز میں احتجاج کریں ۔ انقلابی ادیب کا انٹرویو

چندر شیکھر راؤ ‘ مرکز اور آر ایس ایس کو خوش کرنے کوشاں ‘ مسلمان جمہوری انداز میں احتجاج کریں ۔ انقلابی ادیب کا انٹرویو

حیدرآباد 16اپریل (سیاست نیوز) نکسلائیٹ تحریک سے نرم گوشہ رکھنے والے انقلابی ادیب مسٹر ورا ورا راو نے کہا کہ مسلمان اپنے حق کیلئے جمہوری انداز میں احتجاج کریں اور فاشزم اور سامراجیت کی مخالف طاقتوں کا ساتھ دیں ۔ انہوں نے کہا کہ نکسلائیٹ تحریک کی بنیاد اور ماوسٹوں کا ایجنڈہ صرف اور صرف ہندوتوا اور سامراجیت کے خلاف ہے چونکہ مسلمان شہری علاقوں میں رہتے ہیں جبکہ ماوسٹ جنگلاتی اور دیہی علاقوں میں رہتے ہیں ورا ورا راو نے مسلمانوں سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ وہ انسانی حقوق کے تحفظ اور بقاء کیلئے جمہوری انداز میں جدوجہد کریں اور ان طاقتوں کا ساتھ دیں جو اپنے دشمن کے اور انسانیت دونوں کے خلاف ہے ۔ ورا ورا راو روزنامہ سیاست سے خصوصی بات چیت کے دوران یہ بات بتائی ۔ انہوں نے دونوں ریاستوں میں پیش آئے حالیہ انکاونٹر س پرا پنا رد عمل ظاہر کرتے ہوئے حکومتوں کو اس کا ذمہ دار ٹھہرایا ۔ انہوں نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں مسلمانوں کیلئے وقفہ وقفہ سے زہر افشانی اور سازشیں کی جارہی ہے کوئی ان کی شہریت پر سوال اٹھاتا ہے تو حکومتیں حقوق مانگنے والوں کو ہلاک کردیتی ہیں اور میڈیا وقف اور عدالتوں سے پہلے مسلمانوں کے حق میں فیصلے کردیتا ہے ۔ مسٹر ورا ورا راو نے کہا کہ ایسے نازک دور میں مسلمانوں کو چاہئے کہ وہ سیکولر اور جمہوری انداز میں حقوق کیلئے جاری جدوجہد کا حصہ بن جائیں ۔ انہوں نے فاشزم اور سامراجیت کے خلاف موجودہ پلیٹ فام پر مسلمانوں کا استقبال کیا اور کہا کہ یہ پلیٹ فام ہمیشہ مسلمانوں کے ساتھ اور ان کے حقوق کے حق میں ہے ۔ انقلابی ادیب نے اپنی بات چیت میں مزید بتاتے ہوئے کہا کہ مسلمانوں کو دلتوں اور آدیواسیوں کے حقوق کیلئے جاری تحریک سے جُٹ جانا چاہئے ۔ انہوں نے آلیر انکاونٹر پر اپنا شدید رد عمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ ایک سازش کے تحت زیر دریافت مسلم قیدیوں کا قتل کیاگیا ۔ انہوں نے ریاستی حکومت پر الزام لگایا کہ حکومت اس ساز کا حصہ ہے اور اس انکاونٹر سے بخوبی واقف تھی ۔ انہوں نے چیف منسٹر تلنگانہ چندر شیکھر راو پر الزام لگاتے ہوئے کہا کہ کے سی آر نے مرکز اور آر ایس ایس کو خوش کرنے انکاونٹر کروایا۔ انہوں نے تلنگانہ راشٹرا سمیتی حکومت پر الزامات عائد کرتے ہوئے کہا کہ نئی ریاست میں مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات اور موقع فراہم کرنے کا وعدہ کیا گیا اور جب ان وعدوں کی عمل آوری کا وقت آگیا تو مسلم کا انکاونٹر کردیا گیا ۔ انہوں نے کہا کہ کے سی آر کی مرکزی کابینہ پر نظر ہے اور وہ بلدی چناو کے منتظر ہیں جس کے بعد وہ اپنے قاصدین رامو جی راو اور وینکیا نائیڈو کے ذریعہ مودی حکومت کا حصہ بن جائیں گے ۔ انہو ںنے صدر تلنگانہ راشٹرا سمیتی سے سوال کیا کہ آیا جب وہ این ڈی اے کا حصہ نہیں ہیں تو پھر اراضی بل کی حمایت کیوں کی ۔ ( باقی سلسلہ صفحہ 6 پر )

TOPPOPULARRECENT