Saturday , November 25 2017
Home / جرائم و حادثات / سالگرہ پر نوجوان کی ہوائی فائرنگ

سالگرہ پر نوجوان کی ہوائی فائرنگ

سوشیل میڈیا پر ویڈیو وائرل ، پرانے شہر میں گن کلچر تشویشناک
حیدرآباد /15 مئی ( سیاست نیوز ) پرانے شہر میں نوجوانوں کی جانب سے بندوق کے استعمال کا کلچر عام ہوتا نظر آرہا ہے ۔ فلک نما علاقہ میں رونما تازہ ترین واقعہ میں ایک نوجوان نے اپنی سالگرہ کے موقع پر بندوق سے 12 راؤنڈ ہوائی فائرنگ کرکے سنسنی پیدا کردی ۔ تفصیلات کے بموجب 22 سالہ مرزا ابراہیم علی بیگ ساکن فلک نما نے مبینہ طور پر 5 مئی کو سالگرہ کے موقع پر مسلسل ہوا میں فائرنگ کردی اور اس کی ویڈیو سوشیل نیٹ ورکنگ ویب سائیٹ پر عام کردیا ۔ تقریباً دس دن کے بعد فائرنگ کا معاملہ عام ہونے پر ٹی وی چیانلس اور واٹس اپ گروپ میں فائرنگ کی خبر تیزی سے پھیل گئی جس کے نتیجہ میں پولیس نوجوان کے خلاف کارروائی کرنے کیلئے مجبور ہوگئی ۔ اسسٹنٹ کمشنر آف پولیس فلک نما محمد تاج الدین احمد نے بتایا کہ مرزا ابراہیم علی بیگ ایک اسکول کے ڈائرکٹر مرزا محمد علی بیگ کا بیٹا ہے اور اس نے 5 مئی کو سالگرہ کے موقع پر فائرنگ کی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ نوجوان کے والد اور بڑے بھائی مشتاق علی بیگ کے پاس دو لائسنس یافتہ پستول اور ریوالور موجود ہے ۔ پولیس یہ بات کا پتہ لگانے کی کوشش کر رہی ہے کہ مرزا ابراہیم نے کونسی بندوق کا استعمال کیا ہے ۔ مسٹر تاج الدین نے بتایا کہ والدین کے ہتھیار کا غیر قانونی استعمال اور اس حرکت کو سوشیل میڈیا کے ذریعہ عام کرنے کا کلچر انتہائی تشویشنک ہے اور اس کے خلاف پولیس سخت کارروائی کرے گی ۔ انہوں نے بتایاکہ فلک نما پولیس اسٹیشن میں نوجوان کے خلاف انڈین آرمس ایکٹ کی دفعہ 25 اور 27 اور تعزیرات ہند کی دفعہ 336 کے تحت ایک مقدمہ درج کرتے ہوئے اس کی تلاش شروع کردی گئی ۔ واضح رہے کہ حال ہی میں میں شمع ٹاکیز جہاں نما کے قریب ایک اسی قسم کا واقعہ پیش آیا تھا جس میں شادی کی تقریب کے دوران سڑک پر کھلے عام فائرنگ کی گئی تھی ۔ لیکن پولیس نے اسے مصنوعی بندوق کے ذریعہ فائرنگ کا دعوی کیا تھا ۔ باور کیا جاتا ہے کہ اس کیس میں پولیس یہ جواز تلاش کر رہی ہے کہ نوجوان کی جانب سے استعمال کی ہوئی بندوق مصنوعی بھی ہوسکتی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT