Sunday , June 24 2018
Home / سیاسیات / سال 2014 کے اختتام تک انٹر نیٹ صارفین کی تعداد3ارب ہوجائے گی

سال 2014 کے اختتام تک انٹر نیٹ صارفین کی تعداد3ارب ہوجائے گی

نئی دہلی۔/6مئی، ( پی ٹی آئی) دنیا میں انٹرنیٹ استعمال کرنے والوں کی تعداد میں بے تحاشہ اضافہ ہوتا جارہا ہے۔ اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ جاریہ سال کے ختم تک انٹر نیٹ صارفین کی تعداد 3ارب تک پہنچ جائے گی۔ اقوام متحدہ کی انٹر نیشنل ٹیلی کمیونیکیشن یونین ( آئی ٹی یو ) نے حال ہی میں ایک رپورٹ جاری کی ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ 2014ء کے ختم تک ساری د

نئی دہلی۔/6مئی، ( پی ٹی آئی) دنیا میں انٹرنیٹ استعمال کرنے والوں کی تعداد میں بے تحاشہ اضافہ ہوتا جارہا ہے۔ اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ جاریہ سال کے ختم تک انٹر نیٹ صارفین کی تعداد 3ارب تک پہنچ جائے گی۔ اقوام متحدہ کی انٹر نیشنل ٹیلی کمیونیکیشن یونین ( آئی ٹی یو ) نے حال ہی میں ایک رپورٹ جاری کی ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ 2014ء کے ختم تک ساری دنیا میں انٹرنیٹ استعمال کرنے والوں کی تعداد تقریباً تین ارب ہوجائے گی جن میں سے دوتہائی افراد کا تعلق ترقی پذیر ممالک سے ہوگا۔ رپورٹ میں یہ بھی انکشاف کیا گیا ہے موبائیل ( سل فونس ) استعمال کرنے والوں کی تعداد میں بھی بے تحاشہ اضافہ ہوگا اور ان کی تعداد زائد از 7ارب تک پہنچ جائے گی۔ آئی ٹی یو رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ 2014 کے ختم تک دنیا کے 44 فیصد مکانات کو انٹرنیٹ تک رسائی حاصل ہوگی یعنی یہ مکانات انٹر نیٹ کنکشن سے مربوط ہوں گے۔ واضح رہے کہ ترقی پذیر ممالک میں موبائیل فونس اور انٹر نیٹ کے استعمال کا رجحان تیزی سے پنپ رہا ہے۔ چنانچہ رواں سال کے اواخر تک ترقی پذیر ممالک کے 31فیصد مکانات کو انٹرنیٹ کنکشن سے جوڑدیا جائے گا ،

اس کے بہ نسبت ترقی یافتہ ممالک میں 78فیصد گھروں میں انٹرنیٹ کنکشن ہوگا۔ جہاں تک موبائیل فونس استعمال کرنے والوں کی تعداد کا سوال ہے جاریہ سال کے اختتام تک ان کی جو تعداد تقریباً 7 ارب ہوگی اس میں سے 3.6ارب صارفین کا بحرالکاہل ایشیاء سے تعلق ہوگا۔ رپورٹ میں انکشاف کیا گیا کہ ترقی یافتہ ممالک کی بہ نسبت موبائیل فونس کے استعمال میں ترقی پذیر ممالک کو غیر معمولی سبقت حاصل ہے۔ عالمی سطح پر استعمال ہونے والے موبائیل فونس میں 78فیصد ترقی پذیر ممالک میں استعمال ہوتے ہیں۔ آئی ٹی یو کے سکریٹری جنرل حمداون طورے کا کہنا ہے کہ آئی سی ٹی ( انفارمیشن اینڈ کمیونکیشن ٹکنالوجی ) کی جانب سے جاری کردہ تازہ اعداد و شمار پھر ایک بار اس بات کی تصدیق کرتے ہیں کہ انفارمیشن اینڈ کمیونکیشن ٹکنالہوجیز اطلاعاتی معاشرہ کی کلید ہیں۔ آئی ٹی یو کے بیورو برائے فروغ مواصلات کے ڈائرکٹر براہیما منعاو کے مطابق نئے اعداد و شمار آئی سی ٹی کی برھتی مقبولیت اور اثر کا اظہار کرتے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ان اعداد و شمار کے پیچھے حقیقی انسانی کہانیاں کار فرما ہیں۔ ان لوگوں کی کہانیاں جن کی زندگیوں میں انفارمیشن اینڈ کمیونیکیشن ٹکنالوجی نے انقلاب برپا کردیا جبکہ آئی ٹی یو کا مشن آئی سی ٹیز کو عام لوگوں کے ہاتھوں میں پہنچانا ہے چاہے ان کا تعلق کرہ ارض کے کسی بھی حصہ سے کیوں نہ ہوں۔ آئی ٹی یو رپورٹ کے مطابق افریقہ میں آبادی کے 1/5 ویں حصہ کو انٹر نیٹ تک رسائی حاصل ہوگی۔ اس کے برعکس امریکہ میں تقریباً دو تہائی آبادی خود کو انٹر نیٹ سے مربوط کرلے گی۔ آپ کو بتادیں کہ یوروپ میں آبادی کا 75فیصد حصہ انٹر نیٹ استعمال کرتا ہے جبکہ دنیا میں سب سے زیادہ انٹر نیٹ استعمال کرنے والوں کی تعداد بحرالکاہل ایشیاء میں پائی جاتی ہے۔

TOPPOPULARRECENT