Tuesday , June 19 2018
Home / Top Stories / سال 2018 میں پانچ چاند گہن ہونگے ۔ تین جزوی اور دو مکمل

سال 2018 میں پانچ چاند گہن ہونگے ۔ تین جزوی اور دو مکمل

حیدرآباد 15 جنوری ( سیاست نیوز ) سال 2018 میں جملہ پانچ چاند گہن ہونگے ان میں تین جزوی اور دو مکمل ہونگے ۔ جو پہلا چاند گہن 31 جنوری کو ہوگا اسے ہندوستان سے جزوی طور پر دیکھا جاسکے گا جبکہ جولائی 28 کو ہونے والے چاند گہن کا ہندوستان سے مکمل نظارہ ہوسکے گا ۔ سیاست سے بات چیت کرتے ہوئے ڈائرکٹر نہرو پلانیٹوریم نہرو سنٹر ممبئی ڈاکٹر اروند پرانجپے نے کہا کہ سال 2018 میں جملہ پانچ چاند گہن ہونگے جن میں تین جزوی اور دو مکمل ہونگے ۔ جزوی چاند گہن 15 فبروری ‘13 جولائی اور 11 اگسٹ کو ہونگے تاہم یہ ہندوستان سے نہیں دیکھے جاسکیں گے ۔ دوسرے دو چاند گہن جو ہندوستان سے دیکھے جاسکیں گے ۔ 31 جنوری کو ہونے والے چاند گہن کو ہندوستان سے جزوی دیکھا جاسکے گا جبکہ 28 جولائی کو ہونے والے گہن کو ہندوستان سے مکمل طور پر دیکھا جاسکے گا ۔ انہوں نے بتایا کہ ایک چاند گہن در اصل اس وقت ہوتا ہے جب چاند زمین کے سایہ میں آجاتا ہے ۔ اس رات میں زمین راست چاند اور سورج کے درمیان ہوتی ہے جس سے سورج کی روشنی چاند تک نہیں پہونچ پاتی ۔ چونکہ چاند اور سورج زمین سے بالکل مختلف سمت میں نہیں ہیں اس لئے گہن اکثر چودھویں رات کے چاند کے دوران ہوتا ہے ۔ چاند کا زمین سے 3.84 لاکھ کیلو میٹر کا فاصلہ ہے ۔ اس فاصلہ کی وجہ سے چاند پر زمین کا سایہ کبھی پورا ہوتا ہے اور کبھی خفیف ہوتا ہے ۔ مکمل چاند گہن کے دوران پہلے چاند خفیف سایہ والے حصے میں ہوتا ہے اور اکثر یہ مرحلہ دیکھا نہیں جاسکتا ۔ جیسے جیسے یہ خفیف سایہ آگے بڑھتا ہے اور مکمل سایہ تک پہونچتا ہے ایسے میں چاند کا نصف حصہ اس کے اثر میں آجاتا ہے ۔ جب چاند پوری طرح اس سایہ کے پیچھے آجاتا ہے اسے مکمل چاند گہن کہتے ہیں۔ اس کے بعد چاند زمین کے سایہ سے باہر نکل آتا ہے ۔ چاند گہن کے مکمل مرحلہ کے دوران چاند کا رنگ سرخ بھی ہوتا ہے ۔ کچھ ایسی مثالیں موجود ہیں جب مکمل چاند گہن سے قبل آتش فشاں پھٹا ہے ۔ جولائی 1992 میں فلپائن میں کوہ پیناٹوبو میں آتش فشاں پھٹا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT