Monday , December 11 2017
Home / شہر کی خبریں / ساڑیوں کو نذر آتش کرنے کے واقعات پر چیف منسٹر برہم

ساڑیوں کو نذر آتش کرنے کے واقعات پر چیف منسٹر برہم

SRI K.CHANDRASHEKAR RAO

ملوث افراد کیخلاف مقدمات درج کرنے کی ہدایت، ضلع کلکٹرس سے تفصیلات طلب، اپوزیشن پر ٹی آر ایس کی تنقید
حیدرآباد 19 ستمبر (این ایس ایس) چیف منسٹر کے چندرشیکھر راؤ نے ریاست کے مختلف مقامات پر بتکماں تہوار کے سلسلہ میں تقسیم کی جانے والی ساڑیوں کو نذر آتش کرنے کے مبینہ واقعات پر برہمی کا اظہار کیا۔ اُنھوں نے ضلع کلکٹرس کو اس طرح کے غیر قانونی واقعات کے سلسلے میں رپورٹ پیش کرنے اور ساڑیوں کو نذر آتش کرنے کے پس پردہ ملوث رہنے والوں کے خلاف مقدمات درج کرنے کی ہدایت دی۔ چیف منسٹر نے جگتیال کے چھلگل، کھمم کے ستو پلی اور حیدرآباد میں بعض مقامات پر پیش آئے اِن اشتعال انگیز واقعات کے بارے میں معلومات حاصل کیں۔ اُنھوں نے اپوزیشن قائدین کے طرز عمل پر بھی ناراضگی کا اظہار کیا جو سوشیل میڈیا استعمال کرتے ہوئے ساڑیوں کی تقسیم کے پروگرام پر ریاستی حکومت کو تنقیدوں کا نشانہ بنارہے ہیں۔ اُنھوں نے بعض ٹی وی چیانلس کے طرز عمل پر بھی گہری تشویش ظاہر کی جو مسلسل ساڑیوں کو نذر آتش کرنے اور خواتین کی آپسی لڑائی کو بار بار نمایاں کررہے ہیں۔ اُنھوں نے یہ جاننا چاہا کہ ساڑیوں کو نذر آتش کرنے کے واقعات اور احتجاجی مظاہروں کے علاوہ بعض مقامات پر خواتین کی لڑائی کے پس پردہ کون ہیں؟ اُنھوں نے اِن واقعات کے سلسلے میں حقائق بھی جاننا چاہا۔ چیف منسٹر کو وزیر ٹکسٹائیلس کے ٹی راما راؤ نے اِن واقعات کے بارے میں تفصیلات سے واقف کرایا اور کہاکہ کانگریس اور تلگودیشم قائدین اس کے پس پردہ ملوث ہیں۔ کے سی آر نے کھمم کے رکن اسمبلی پی اجئے کمار سے فون پر ربط قائم کرتے ہوئے ضلع میں ساڑیوں کی تقسیم کے پروگرام کے تعلق سے تفصیلات معلوم کیں۔ اجئے کمار نے چیف منسٹر کو بتایا کہ خواتین خوشی سے ساڑیاں حاصل کررہی ہیں اور پروگرام مؤثر اور منظم انداز میں جاری ہے۔ اِس دوران ٹی آر ایس قیادت نے اپوزیشن جماعتوں پر بتکماں ساڑیوں کی تقسیم پروگرام پر نچلی درجہ کی سیاست کا الزام عائد کیا۔ ٹی آر ایس لیجسلیچر پارٹی آفس میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے سرینواس گوڑ رکن اسمبلی نے ساڑیاں نذر آتش کرنے کے واقعہ پر ناراضگی ظاہر کی۔ اُنھوں نے کہاکہ حکومت کا مقصد غریب عوام کو پھولوں کے تہوار کے موقع پر تحفہ پیش کرنا تھا۔ اس کے ساتھ ساتھ ہینڈلوم ورکرس کی بھی مدد کی جارہی ہے۔ سرینواس گوڑ نے الزام عائد کیاکہ اپوزیشن جماعتیں سوشیل میڈیا کے ذریعہ ساڑیوں کی تقسیم کے پروگرام کو متاثر کرتے ہوئے سیاسی فائدہ حاصل کرنے کی کوشش کررہی ہیں۔ اُنھوں نے ٹی وی چیانلس اور پرنٹ میڈیا سے خواہش کی کہ وہ اس طرح کی خبروں کی تشہیر سے گریز کریں کیوں کہ ریاست کے خواتین کی توہین اور حکومت کی تضحیک ہے۔ محض حکومت کو مورد الزام قرار دینے کے مذموم ارادوں کے ساتھ اپوزیشن جماعتیں اِس پروگرام کو سبوتاج کررہی ہیں۔ اُنھوں نے کہاکہ چیف منسٹر کے چندرشیکھر راؤ نے بڑے بھائی کی حیثیت سے بتکماں تہوار کے موقع پر غریب خواتین کو ساڑیوں کا تحفہ دینے کا فیصلہ کیا۔ اُنھوں نے بتایا کہ متعلقہ عہدیداروں نے ساڑیوں کے معیار کا تفصیلی جائزہ لینے اور مطمئن ہونے کے بعد ہی خریدی کی ہے۔ اُنھوں نے سستی ساڑیوں کی تقسیم کے الزامات کو مسترد کردیا۔ اُنھوں نے کہاکہ یہ الزامات دراصل اپوزیشن کانگریس اور تلگودیشم پارٹی کی مایوسی کا اظہار ہے۔ اُنھیں حکومت کا وقار متاثر کرنے کی اِس گندی سیاست کو ختم کرنا چاہئے۔ اُنھوں نے بتایا کہ ریاستی حکومت چونکہ 1.04 کروڑ ساڑیاں تیار نہیں کرسکتی اِسی لئے سورت (گجرات) سے بھی ساڑیاں خریدی گئیں۔ اُنھوں نے ساڑیوں کے پروگرام پر رکن پارلیمنٹ کویتا کے خلاف عائد الزامات کی بھی مذمت کی۔ اُنھوں نے کہاکہ اپوزیشن پارٹیوں کے لوٹ مار کے چند ایک واقعات کے ماسواء اضلاع میں اِس پروگرام کا مثبت ردعمل رہا ہے۔

TOPPOPULARRECENT