Monday , June 18 2018
Home / شہر کی خبریں / ساہتیہ اکیڈیمی ایوارڈ 2017 کا اعلان

ساہتیہ اکیڈیمی ایوارڈ 2017 کا اعلان

اردو میں اکیڈیمی ایوارڈ پروفیسر بیگ احساس اور ترجمہ ایوارڈ محمود احمد سحر منتخب
نئی دہلی ۔ 21 ۔ دسمبر : ( پریس نوٹ ) : اردو کے ممتاز افسانہ نگار و نقاد پروفیسر بیگ احساس کو ان کے افسانوی مجموعہ ’ دخمہ ‘ پر ساہتیہ اکیڈیمی ایوارڈ 2017 دینے کا اعلان کیا گیا ۔ اکیڈیمی کے صدر پروفیسر وشوا ناتھ پرساد تیواری کی صدارت میں منعقدہ ایکزیکٹیو بورڈ کی میٹنگ کے دوران ہندوستان کی 24 زبانوں کے ادیب و شاعر کو ان کی تصنیفات پر ایوارڈ دئیے جانے کے فیصلے کو منظوری دی گئی ۔ اس کے بعد سکریٹری ڈاکٹر کے سری نواس راؤ نے سبھی زبانوں کے انعامات کا اعلان کیا ۔ اردو میں یہ ایوارڈ پروفیسر بیگ احساس کو دیا جائے گا ۔ اردو کے جدید افسانہ نگاروں میں پروفیسر بیگ احساس ایک نمایاں نام ہے ۔ فن افسانہ نگاری پر ان کی گرفت مضبوط ہے ۔ ان کے ہاں موضوعات کا تنوع ہے اور ہر افسانہ ایک جداگانہ آرکیٹکچر رکھتا ہے ۔ افسانی مجموعہ ’ دخمہ ‘ سے قبل ان کے دو افسانوی مجموعے ایک تنقیدی مضامین کا مجموعہ اور مرتب کردہ کتابیں منظر عام پر آچکی ہیں ۔ انہوں نے تقریبا 35 برسوں تک اردو کے استاذ کی حیثیت سے خدمات انجام دیں ۔ وہ عثمانیہ یونیورسٹی میں صدر شعبہ اردو رہے اور پھر یونیورسٹی آف حیدرآباد میں بھی صدر شعبہ اردو کی حیثیت سے خدمات انجام دیں ۔ آج کل وہ اردو کے ادبی رسالہ سب رس کے مدیر ہیں ۔ پروفیسر بیگ احساس کے علاوہ حیدرآبادی فن کاروں میں صرف مخدوم محی الدین اور گیان سنگھ شاطر کو ہی ساہتیہ اکیڈیمی ایوارڈ مل چکا ہے ۔ ساہتیہ اکیڈیمی ایوارڈ ایک لاکھ روپئے اور امتیازی نشان پر مشتمل ہے ۔ اردو کے لیے ترجمہ ایوارڈ محمود احمد سحر کو دیا گیا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT