Wednesday , January 24 2018
Home / Top Stories / سبسڈیز کو معقول بنانے خصوصی اقدامات کئے جائیں گے : جیٹلی

سبسڈیز کو معقول بنانے خصوصی اقدامات کئے جائیں گے : جیٹلی

چینائی 19 جنوری ( سیاست ڈاٹ کام ) اب جبکہ مرکزی بجٹ کی پیشکشی کیلئے ایک ماہ کا وقت رہ گیا ہے وزیر فینانس ارون جیٹلی نے آج کہا کہ حکومت کی جانب سے انفرا اسٹرکچر کو بہتر بنانے پر عوامی صرفہ میں اضافہ کی کوشش کی جائیگی ۔ انہوں نے کہا کہ سبسڈیز کو معقول بنانے کیلئے بھی خصوصی اقدامات کئے جائیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ مالیہ میں اقتصادی خسارہ کی م

چینائی 19 جنوری ( سیاست ڈاٹ کام ) اب جبکہ مرکزی بجٹ کی پیشکشی کیلئے ایک ماہ کا وقت رہ گیا ہے وزیر فینانس ارون جیٹلی نے آج کہا کہ حکومت کی جانب سے انفرا اسٹرکچر کو بہتر بنانے پر عوامی صرفہ میں اضافہ کی کوشش کی جائیگی ۔ انہوں نے کہا کہ سبسڈیز کو معقول بنانے کیلئے بھی خصوصی اقدامات کئے جائیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ مالیہ میں اقتصادی خسارہ کی موجودہ صورتحال کے باوجود یہ حالات حکومت کیلئے ایک چیلنجنگ اور مشکل موقع ہیں۔ تاہم وہ سمجھتے ہیں کہ جہاں تک سرکاری صرفہ کا سوال ہے اس پر خصوصی اقدامات کرنے کی ضرورت ہے ۔ وزیر موصوف نے معاشی ترقی کو بہتر بنانے انفرا اسٹرکچر شعبہ میں عوامی صرفہ میں اضافہ کرنے کی ضرورت پر زور دیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ عوامی ۔ خانگی شراکت کا مکمل ماڈل ہی فی الحال دباؤ کا شکار ہے اور ہمیں اس کا احیاء عمل میں لانے کی ضرورت ہے ۔ یہ ایک ایسا راستہ ہے جس پر ہم چل رہے ہیں اور ہمیں امید ہے کہ حکمرانی میں واضح بہتری کے باعث ہم آگے بڑھنے کے اہل ہونگے ۔ ارون جیٹلی کنفیڈریشن آف انڈین انڈسٹریز کے اجلاس سے یہاں خطاب کر رہے تھے ۔ سبسڈیز کو معقول بنانے کی ضرورت کا حوالہ دیتے ہوئے ارون جیٹلی نے کہا کہ یکم جنوری سے ایل پی جی کی سبسڈی بینکوں کے ذریعہ جا رہی ہے ۔ ہمیں تمام امکانی سبسڈیز کو بتدریج معقول بنانے کی ضرورت ہے ۔ حکومت کو امکان ہے کہ اس سلسلہ میں سابق صدر نشین ریزرو بینک آف انڈیا بمل جالان کی قیادت والی اخراجات فینانس کمیشن سے بھی تجاویز مل سکتی ہیں جن کا حکومت بجٹ 2015 – 16 میں خیال رکھے گی ۔ ارون جیٹلی آئندہ ماہ یہ بجٹ پیش کرینگے ۔ سمجھا جاتا ہے کہ بمل جالان نے اپنی عبوری سفارشات وزارت فینانس کو پیش کردی ہیں جن میں سبسڈیز کو معقول بنانے اور عوامی اخراجات میں بہتری کے تعلق سے تجاویز پیش کی ہیں۔ حکومت کا تیل و کھادوں سے متعلق سبسڈیز کا خرچ لاکھوں کروڑ روپئے میں ہے ۔ وزیر فینانس نے ٹیکس اور دیگر پالیسیوں میں استحکام پیدا کرنے کی ضرورت پر زور دیا تاکہ ہندوستان کو سرمایہ کاری کیلئے ایک پرکشش مقام بنایا جاسکے ۔ انہوں نے کہا کہ گڈس اینڈ سرویس ٹیکس ( جی ایس ٹی ) پر عمل آوری کے نتیجہ میں ملک میں کاروبار کا ماحول بہتر ہوگا ۔ جیٹلی نے کہا کہ جی ایس ٹی کا مختلف ریاستوں نے خیر مقدم کیا ہے اور کسی بھی ریاست کا ایک روپئے کا بھی نقصان نہیں ہوگا ۔ انہوں نے کہا کہ جی ایس ٹی کی پرسکون منتقلی کے نتیجہ میں جملہ گھریلو پیداوار میں اضافہ ہوگا ۔ اس کے نتیجہ میں کاروبار آسان ہوگا اور طویل مدت میں اس کے نتیجہ میں محاصل بھی کم ہونگے ۔ انہوں نے ادعا کیا کہ کاروباری حالات کی بہتری کے نتیجہ میں ریاستوں کی مدد ہوگی ۔ انہوں نے کہا کہ آج تقریبا دو لاکھ کروڑ روپئے سرویس ٹیکس وصول کیا جاتا ہے اور ریاستوں کو بھی اس میں حصہ ادا کرنا پڑتا ہے ۔ جن ریاستوں کو یہ ادائیگی کرنی پڑتی ہے ان میں کچھ ریاستوں کو جی ایس ٹی پر عمل آوری کے پہلے ہی دن سے فائدہ ہوگا ۔ انہوں نے ادعا کیا کہ حصول اراضی قوانین میں مجوزہ ترامیم کے نتیجہ میں کسانوں کو ان کی اراضیات کی بہتر قیمت حاصل کرنے میں مدد ہوگی ۔

TOPPOPULARRECENT