Saturday , August 18 2018
Home / شہر کی خبریں / سبم ہری کی لمحۂ آخر میں دستبرداری سازش

سبم ہری کی لمحۂ آخر میں دستبرداری سازش

پارٹی اور عوام کو دھوکہ، جے سمکھیا لیڈر ہرش کمار کا ردعمل

پارٹی اور عوام کو دھوکہ، جے سمکھیا لیڈر ہرش کمار کا ردعمل

حیدرآباد /6 مئی (سیاست نیوز) قائد جے سمکھیا پارٹی ہرش کمار نے لمحہ آخر میں سبم ہری کی مقابلہ سے دست برداری کو سازش کا حصہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ ان کی پارٹی کے امیدواروں کی حوصلہ شکنی کی کوشش کی گئی ہے۔ انھوں نے کہا کہ ریاست کو متحد رکھنے کے لئے جے سمکھیا پارٹی تشکیل دی گئی، تاہم رائے دہی سے صرف چند گھنٹے پہلے مقابلہ سے دست برداری اختیار کرکے سبم ہری نے پارٹی اور عوام کو دھوکہ دیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ سبم ہری نے تلگودیشم اور بی جے پی کی کیوں تائید کی ہے، وہ اس سے لاعلم ہیں، جب کہ تلگودیشم نے تلنگانہ کی تائید میں مرکز کو تحریری مکتوب حوالے کیا تھا اور پارلیمنٹ میں بی جے پی کی تائید کے بغیر تلنگانہ بل کی منظوری ناممکن تھی، لہذا ریاست کی تقسیم کی ذمہ داری کانگریس، تلگودیشم اور بی جے پی تینوں پر برابر عائد ہوتی ہے۔ انھوں نے کہا کہ وہ اور دیگر جے سمکھیا کے امیدوار انتخابی میدان میں موجود ہیں، جب کہ پارٹی آندھرا پردیش کو متحد رکھنے کے لئے اپنی جدوجہد جاری رکھے گی۔ جمہوریت کا خون کرکے ریاست کی تقسیم کا الزام عائد کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ سپریم کورٹ کا قطعی فیصلہ متحدہ آندھرا کی تائید میں ہوگا، کیونکہ سپریم کورٹ نے صرف حکم التواء سے انکار کیا ہے، تاہم ریاست کی تقسیم کے فیصلہ کو درست قرار نہیں دیا۔ انھوں نے کہا کہ سبم ہری نے مقابلہ سے دست بردار ہوکر عجلت پسندی کا مظاہر کیا ہے، جب کہ ان کی جانب سے پیش کردہ دست برداری کا جواز درست نہیں ہے۔

TOPPOPULARRECENT