ستیم دھوکہ دہی کیس : راما لنگا راجو کو 6ماہ کی قید اورجرمانہ

حیدرآباد۔8ڈسمبر ( پی ٹی آئی) ملک میں کارپوریٹ دھوکہ دہی کے ایک انتہائی سنسنی خیز واقعہ کے کلیدی ملزم اور ستیم کمپیوٹرس کے بانی بی راما لِنگا راجو اور دیگر ملزمین کو ایک مقامی عدالت نے دھوکہ دہی کے سنگین واقعات کی تحقیقات کرنے والے دفتر ( ایس ایف آئی او) کی طرف سے کی گئی شکایات پر مقدمہ کی سماعت کے بعد مجرم قرار دیا ہے ۔ عدالت نے راجو اور دیگر تمام ملزمین کو 6ماہ کی سزائے قید دی ہے ۔ علاوہ ازیں تمام کے خلاف جرمانے عائد کئے گئے ہیں ۔ ایس ایف آئی او نے جو مرکزی وزارت کارپوریٹ اُمور کا تحقیقاتی شعبہ بھی ہے سابق ستیم کمپیوٹرس سروسیس لمٹیڈ ( ایس سی ایس ایل اور اس کے ڈائرکٹرس کے خلاف کمپنی قوانین کی خلاف ورزی پر ڈسمبر 2009ء کے دوران اقتصادی جرائم کی خصوصی عدالت میں 7شکایات دائر کیا تھا ۔ راجو اور اس کمپنی کے چند ڈائرکٹرز کو 6ماہ کی سزائے قید دی گئی ہے اور فی کس 10ہزار روپئے تا 10لاکھ روپئے جرمانے عائد کئے گئے ہیں ۔ مابقی چند دوسرے مجرمین کے خلاف صرف جرمانے عائد کئے گئے ہیں ۔ عدالت نے ایک سابق ڈائرکٹر کرشنا جی پالے کے خلاف 2.66 کروڑ روپئے کا بھاری جرمانہ عائد کیا ہے اور اندرون دو ماہ جرمانہ ادا کرنے کی ہدایت کی ۔ خصوصی استغاثہ سی رگھو نے کہا کہ ’’ 7شکایات کے منجملہ ملزمین بشمول راجو اور چند دوسروںکو 6شکایات میں مجرم قرار دیتے ہوئے قید اور جرمانوں کی سزا سنائی گئی ہے ۔ جب کہ ایک درخواست میں ثابت ہونے والا جرم صرف جرمانوں تک محدود تھالیکن الزامات ثابت نہ ہونے پر انہیں بری کردیا گیا ‘‘ ۔ راما لنگاراجو فی الحال ضمانت پر رہا ہیں ‘عدالت نے آج کے احکام کو معطل رکھا تاکہ ملزمین کو اپیل دائر کرنے کا موقع فراہم کیا جاسکے ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT