Monday , December 18 2017
Home / شہر کی خبریں / سدھیر کمیشن کا دورہ نلگنڈہ ، اقلیتی اسکیمات کا جائزہ

سدھیر کمیشن کا دورہ نلگنڈہ ، اقلیتی اسکیمات کا جائزہ

جوائنٹ کلکٹر ستیہ نارائنا اور مختلف محکمہ جات کے عہدیداروں کے ساتھ اجلاس
حیدرآباد۔/19جنوری، ( سیاست نیوز) مسلمانوں کی تعلیمی، معاشی اور سماجی صورتحال کا جائزہ لینے کیلئے قائم کردہ سدھیر کمیشن آف انکوائری نے آج ضلع نلگنڈہ کا دورہ کیا اور عہدیداروں کے ساتھ جائزہ اجلاس منعقد کرتے ہوئے اقلیتی اسکیمات پر عمل آوری کی تفصیلات حاصل کی۔ کمیشن کے صدر نشین جی سدھیر ریٹائرڈ آئی اے ایس اور ارکان ڈاکٹر عامر اللہ خاں، پروفیسر عبدالشعبان اور ڈاکٹر ایم اے باری نے جوائنٹ کلکٹر ستیہ نارائنا اور مختلف محکمہ جات کے عہدیداروں کے ساتھ اجلاس منعقد کیا۔ ضلع کلکٹر کسی اور سرکاری مصروفیت کے سبب شریک اجلاس نہ ہوسکے۔ اجلاس میں عہدیداروں کی جانب سے جو تفصیلات داخل کی گئی ہیں ان پر کمیشن نے عدم اطمینان کا اظہار کیا اور ضلع میں اقلیتی بہبود کی اسکیمات میں سُست رفتاری پر ناراضگی ظاہر کی۔ جائزہ اجلاس میں پتہ چلا کہ اسکیمات سے استفادہ کی رفتار انتہائی سُست ہے اور عہدیدار اسکیم کی کامیابی میں عدم دلچسپی کا مظاہرہ کررہے ہیں۔ ضلع کی مسلم آبادی حکومت کی اسکیمات سے لاعلم ہے اور اگر وہ عہدیداروں تک پہنچتے ہیں تو انہیں صحیح رہنمائی نہیں کی جاتی۔ عوامی سماعت کے دوران مسلمانوں نے شکایت کی کہ بینکوں کی جانب سے قرض کی اجرائی سے انکار کیا جارہا ہے اور معمولی قرض کیلئے بھاری گیارنٹی کی شرط رکھی جارہی ہے جو غریب خاندانوں کیلئے ممکن نہیں۔ کمیشن نے بینکرس کو مشورہ دیا کہ وہ مسلمانوں کو چھوٹے کاروبار کے آغاز کیلئے گیارنٹی پر اصرار نہ کریں کیونکہ مسلمان پہلے ہی سے کافی پسماندہ ہیں اور وہ ضمانت کے طور پر ملکیت کے کاغذات پیش کرنے سے قاصر ہیں۔ کمیشن کا احساس ہے کہ اقلیتی فینانس کارپوریشن کے تحت چلنے والی اسکیمات کی رفتار بھی ضلع نلگنڈہ میں انتہائی سُست ہے۔ کارپوریشن کو اس سلسلہ میں کارروائی کرنی چاہیئے۔ کمیشن نے اس سلسلہ میں اقلیتی فینانس کارپوریشن کو مکتوب روانہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ جائزہ اجلاس کے بعد کمیشن نے عوامی سماعت کا اہتمام کیا اور مختلف شکایتوں کی یکسوئی کیلئے عہدیداروں کو برسر موقع ہدایات جاری کیں۔جانچ کے دوران پتہ چلا کہ ضلع میں اردو میڈیم مدارس میں طلباء کی تعداد انتہائی کم ہے۔ اساتذہ کی کمی اور بنیادی سہولتوں کی عدم فراہمی کے سبب مسلمان اپنے بچوں کو انگلش اور تلگو میڈیم کے خانگی اسکولوں میں شریک کرنے پر مجبور ہیں۔ مسلمانوں کو مختلف اسکیمات سے استفادہ کیلئے درکار بی سی سرٹیفکیٹ کی اجرائی میں عہدیدار مختلف شرائط عائد کرتے ہوئے رکاوٹ پیدا کررہے ہیں۔ سدھیر کمیشن نے محکمہ مال کے عہدیداروں کو بی سی سرٹیفکیٹ کے رہنمایانہ خطوط سے آگاہ کیا اور کہا کہ سرٹیفکیٹ کی اجرائی میں کوئی تاخیر نہیں ہونی چاہیئے۔ چونکہ یہ شکایت ہر ضلع میں یکساں ہیں لہذا اس سلسلہ میں حکومت سے نمائندگی کا فیصلہ کیا گیا۔ کمیشن کا احساس ہے کہ ضلع نلگنڈہ میں مسلمانوں کی حالت انتہائی پسماندہ ہے۔ کمیشن نے ابھی تک 9 اضلاع کا دورہ مکمل کرلیا ہے اور جاریہ ماہ کے اواخر میں کریم نگر کا دورہ کیا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT