Friday , October 19 2018
Home / دنیا / سربراہ کے خلاف ریمارکس پر بنگلہ فوج کا شدید رد عمل

سربراہ کے خلاف ریمارکس پر بنگلہ فوج کا شدید رد عمل

ڈھاکہ 13 اکٹوبر ( سیاست ڈاٹ کام ) ہفتہ کو بنگلہ دیشی فوج نے ایک موافق اپوزیشن حقوق انسانی کارکن کے تبصرہ پر شدید رد عمل کا اظہار کیا ہے جنہوں نے فوجی سربراہ کی وفاداری پر سوال کیا تھا ۔ فوج نے کہا کہ یہ تبصرہ در اصل فوج کی اعلی قیادت کے وقار کو گھٹانے کی کوشش ہے اور اس سے فوج کے حوصلے پست ہوتے ہیں۔ 75 سالہ ڈاکٹر جعفر اللہ چودھری نے ایک ٹی وی کے ٹاک شو کے دوران یہ واضع کیا تھا کہ فوج کے جو اسلحہ اور ہتھیار لاپتہ بتائے جاتے ہیں انہیں فوجی ٹھکانہ سے چوری کیا گیا اور فروخت کردیا گیا ۔ یہ چوری چٹوگرام علاقہ میں ہوئی جہاں فوجی سربراہ جنرل عزیز احمد کمانڈر تھے ۔ جعفر اللہ چودھری ایک ڈاکٹر ہیں اور وہ ایک دواخانہ اور میڈکل کالج کے بانی بھی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس واقعہ کے انکشاف کے بعد عزیز احمد کاکورٹ مارشل بھی کیا گیا تھا ۔ چودھری فی الحال موجودہ حکومت کے خلاف مہم چلا رہے ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ حکومت کی غلط پالیسیوں سے حالات ابتر ہوئے ہیں۔ بنگلہ دیش میں جاریہ سال ڈسمبر میں انتخابات ہونے والے ہیں۔ فوج نے چودھری کے تبصرہ کو مکمل غلط قرار دیا ہے اور کہا کہ یہ گمراہ کن ہیں اور اغراض پر مبنی ہیں۔ اس کا مقصد فوج جیسے ادارے کے وقار کو گھٹانا اور فوجیوں کے حوصلے پست کرنا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT