Friday , November 24 2017
Home / ہندوستان / سرحد پر تعینات بی ایس ایف جوانوں کے کردار پر سوالیہ نشان

سرحد پر تعینات بی ایس ایف جوانوں کے کردار پر سوالیہ نشان

اگرتلہ، 16 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) تریپورہ میں ہند ۔ بنگلہ دیش سرحد پر 85 فیصد سے بھی زیادہ تاروں کی باڑ لگائے جانے کے باوجود بنگلہ دیش کی جانب سے غیر قانونی طور سے ہندوستانی سرحد میں داخل ہونے اور سامان لائے جانے کی بڑھتی ہوئی سرگرمیوں کی وجہ سے یہاں تعینات سرحدی سلامتی فورس (بی ایس ایف) کے جوانوں کے کردار پر سوالیہ نشان کھڑا ہو گیا ہے ۔ موصولہ اطلاعات کے مطابق گزشتہ سال تریپورہ میں بی ایس ایف جوانوں اور شہریوں کے درمیان جھڑپوں کے 20 سے زیادہ واقعات پیش آئے ہیں، تاہم بی ایس ایف نے ریاست کے مختلف سرحدی علاقوں سے کافی تعداد میں غیر قانونی طور سے داخل ہونے والے بنگلہ دیشی شہریوں کو حراست میں لیا ہے اور 10 کروڑ روپے سے بھی زیادہ کا سامان برآمد کیا۔ بی ایس ایف کے ایک سینئر افسر نے بتایا کہ سرحد پر تعینات بی ایس ایف کے جوانوں کے خلاف اسمگلر گروہوں کے ساتھ ملوث ہونے اور سرحدپار کی سرگرمیوں کے سلسلے میں بہت سی شکایات موصول ہوئی ہیں اور سینئر افسر اس کی جانچ کر رہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT