Saturday , November 25 2017
Home / جرائم و حادثات / سرخ صندل کی لکڑی کا اسمگلر گنگی ریڈی ہندوستان منتقل

سرخ صندل کی لکڑی کا اسمگلر گنگی ریڈی ہندوستان منتقل

آندھرا پردیش پولیس ‘ ماریشس سے ہندوستان لے آئی ‘ ڈی جی پی آندھرا کی پریس کانفرنس
حیدرآباد /15 نومبر (سیاست نیوز) آندھراپردیش پولیس نے بدنام زمانہ سرخ صندل کے اسمگلر کے گنگی ریڈی کو ماریشیس حکومت کی جانب سے ہندوستان کو حوالگی پر شہر منتقل کیا ۔ انٹرپول نے سی بی آئی کی درخواست پر اسمگلر کے خلاف ریڈکارنر نوٹس جاری کیا تھا جس کی مدد سے اسے ماریشیس میں گرفتار کرلیا گیا ۔ ڈی جی پی آندھراپردیش مسٹر جے وی راموڈو نے آج پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے بتایا کہ ریاست کی سی آئی ڈی نے کولم گنگی ریڈی کو کامیاب طور پر ریاست منتقل کرلیا ہے جس کے خلاف کئی مقدمات ہیں ۔ انہوں نے بتایا کہ مارچ 2014 میں گنگی ریڈی کو اسمگلنگ مقدمہ میں کرنول کی ڈون پولیس نے گرفتار کیا تھا لیکن اس نے ہائیکورٹ سے مشروط ضمانت حاصل کی تھی اور پولیس انتخابات میں مصروف ہونے پر وہ دوبئی فرار ہوگیا تھا ۔ دوبئی سے ماریشیس منتقل ہوگیا تھا ۔ انٹرپول کی ریڈکارنر نوٹس کی مدد سے جاریہ سال فبروری میں اس کا پتہ لگالیا گیا اور اسے ماریشیس پولیس نے حراست میں لے لیا ۔ آندھراپردیش سی آئی ڈی سربراہ مسٹر ڈی ترومل راؤ پر مشتمل ایک ٹیم نے ماریشیس پہونچ کر گنگی ریڈی کو ہندوستان منتقل کیا ۔ انہوں نے بتایا کہ گنگی ریڈی نے 1987 ء میں جرم کی دنیا میں قدم رکھا اور وہ کئی سنگین وارداتوں پر بشمول قتل ، اقدام قتل اور سرخ صندل اسمگلنگ میں ملوث ہے ۔ قتل کیس میں کڑپہ کے ایڈیشنل سیشنس کورٹ نے 1998 ء میں اسے عمر قید کی سزاء سنائی تھی لیکن وہ سپریم کورٹ سے رجوع ہوا تھا اور اس کی سزاء 4 سال تک گھٹادی گئی تھی ۔ غیرقانونی طور پر حاصل سرخ صندل کی لکڑی کو وہ جاپان ، چین اور دوبئی بھیجا کرتا تھا ۔ گنگی ریڈی نے کئی سیاسی قائدین کی مدد حاصل کی اور اس نے ماؤسٹوں سے تعلقات قائم کئے ۔ چیف منسٹر چندرا بابو نائیڈو پر 2003 ء میں ہوئے حملے میں ملوث تھا ۔ جس میں اسے 7 سال کی سزاء سنائی گئی تھی ۔ اسکے خلاف آندھرا میں 27 مقدمات زیر التواہیں ۔ گنگی ریڈی نے فرضی دستاویزات سے پاسپورٹ حاصل کیا تھا جسے حکومت نے منسوخ کردیا تھا ۔ گنگی ریڈی کو سی آئی ڈی اپنی تحویل میں لیکر اسمگلنگ سے متعلق مقدمات میں پوچھ گچھ کرے گی ۔

TOPPOPULARRECENT