Thursday , June 21 2018
Home / شہر کی خبریں / سردار پٹیل نہ ہوتے تو حیدرآباد آنے کیلئے ویزا ضروری ہوتا:مودی

سردار پٹیل نہ ہوتے تو حیدرآباد آنے کیلئے ویزا ضروری ہوتا:مودی

تلنگانہ میں نریندر مودی کے جلسے ،لال بہادر اسٹیڈیم خالی، شہ نشین پر چندرا بابو نائیڈو ، پون کلیان موجود، کانگریس پر تنقید

تلنگانہ میں نریندر مودی کے جلسے ،لال بہادر اسٹیڈیم خالی، شہ نشین پر چندرا بابو نائیڈو ، پون کلیان موجود، کانگریس پر تنقید
حیدرآباد ۔ 22 ۔ اپریل (سیاست نیوز) تلنگانہ کے عوام کے جذبات کو بھڑکاتے ہوئے نریندر مودی نے آج کہا کہ کانگریس نے تلگو جذبہ کا قتل کیا ہے جبکہ اس نے تلنگانہ ریاست تشکیل دیتے ہوئے آندھراپردیش کی تقسیم کے ذریعہ ایسا عمل کیا جو ماں کا قتل کر کے بچے کو جنم دینے کے مترادف ہے۔ انہوں نے سونیا گاندھی کے خاندان پر بھی الزام عائد کیا کہ اس خاندان نے کبھی بھی آندھرا اور تلنگانہ والوں کو پسند نہیں کیا ہے ۔ یہ خاندان ہمیشہ تلنگانہ اور آندھرا والوں کو حقارت کی نظر سے دیکھتا ہے ۔ حکمراں پارٹی نے سابق وزیراعظم پی وی نرسمہا راؤ کی وراثت کو بھی مٹادیاہے ۔ بی جے پی کے وزارت عظمی کے امیدوار نے آج پہلی مرتبہ میں صدر تلگو دیشم چندرا بابو نائیڈو کے ساتھ ایک ہی شہ نشین پر بیٹھ کر تلگو دیشم سے بی جے پی کی اتحاد کی توثیق کردی۔ حیدرآباد میں نریندر مودی نے کہا کہ چندرا بابو نائیڈو اور بی جے پی اتحاد کے ساتھ پون کلیان کی جوڑی ایک ایسی کمیسٹری کا کام کرے گی جس سے انتخابی کامیابی یقینی ہوگی اور سیاسی پنڈتوں کو غلط ثابت کردے گی۔ تلنگانہ میں نریندر مودی کے جلسوں میں کوئی جوش و خروش نہیں دیکھا گیا۔ خاص کر حیدرآباد میں لال بہادر اسٹیڈیم خالی نظر آرہا تھا۔ بظاہر یہ جلسہ فلاپ شو ثابت ہوا۔ قبل ازیں یہ قیاس کیا جارہا تھا کہ مودی کی آمد پر عوام میں بڑا جوش و خروش ہوگا اور زبردست ریالی منعقد ہوگی۔ نریندر مودی نے جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے حیدرآباد کے حوالہ سے کہا کہ اگر سردار ولبھ بھائی پٹیل نہیں ہوتے تو حیدرآباد جانے کیلئے ویزا لینا پڑتا۔ حیدرآباد ملک کا حصہ بھی نہیں ہوتا۔ شہ نشین پر صدر تلگو دیشم پارٹی مسٹر این چندرا بابو نائیڈو ، صدر ریاستی بی جے پی مسٹر جی کشن ریڈی ، فلم اسٹار پون کلیان کے علاوہ تلگو دیشم اور بی جے پی کے قائدین اس موقع پر موجود تھے۔نریندر مودی نے کہا کہ کانگریس خاندان نے ہمیشہ تلگو عوام کی توہین کی ہے ۔ راجیو گاندھی نے حیدرآباد کے ایرپورٹ پر بحیثیت چیف منسٹر خدمات انجام دینے والے انجیا کی توہین کی ۔ راجیو گاندھی صرف ایک وزیراعظم کے فرزند تھے ۔ اس غلطی سے کانگریس 20 سال تک آندھراپردیش سے اوجھل ہوگئی اور ایک تلگو قائد سنجیو ریڈی کی پیٹھ میں خنجر گھونپ کر اندرا گاندھی نے وی وی گری کو ملک کا صدر جمہوریہ بنادیا ۔ پی وی نرسمہا راؤ کا شمار ملک کے کامیاب وزرائے اعظم کی فہرست میں ہوتا ہے مگر کانگریس نے ان کی بھی توہین کی۔ اندرا گاندھی راجیو گاندھی کے ناموں پر کئی اسکیمات ہیں، مگر نرسمہا راؤ کے نام پر ایک اسکیم بھی نہیں ۔ کانگریس نے ان کی برسی اور یوم پیدائش پر خراج پیش کرنا بھی مناسب نہیں سمجھتی۔

TOPPOPULARRECENT