Sunday , June 24 2018
Home / سیاسیات / سردار پٹیل نے آر ایس ایس کو زہریلی تنظیم قرار دیا تھا : راہول

سردار پٹیل نے آر ایس ایس کو زہریلی تنظیم قرار دیا تھا : راہول

دھرم شالہ 20 مارچ ( سیاست ڈاٹ کام ) آر ایس ایس اور نریندر مودی پر اپنی تنقیدوں میں شدت پیدا کرتے ہوئے راہول گاندھی نے آج الزام عائد کیا کہ وہ سردار ولبھ بھائی پٹیل کی وراثت کا استحصال کرنا چاہتی ہے ۔ انہوں نے یاد دہانی کروائی کہ سردار پٹیل کانگریس سے وابستہ تھے اور انہوں نے آر ایس ایس کو ایک ایسی زہریلی تنظیم قرار دیا تھا جو ملک کو ختم ک

دھرم شالہ 20 مارچ ( سیاست ڈاٹ کام ) آر ایس ایس اور نریندر مودی پر اپنی تنقیدوں میں شدت پیدا کرتے ہوئے راہول گاندھی نے آج الزام عائد کیا کہ وہ سردار ولبھ بھائی پٹیل کی وراثت کا استحصال کرنا چاہتی ہے ۔ انہوں نے یاد دہانی کروائی کہ سردار پٹیل کانگریس سے وابستہ تھے اور انہوں نے آر ایس ایس کو ایک ایسی زہریلی تنظیم قرار دیا تھا جو ملک کو ختم کردیگی ۔ ہماچل پردیش میں کانگریس کی انتخابی مہم کا اس خوبصورت شہر میں آغاز کرتے ہوئے راہول گاندھی نے بی جے پی وزارت عظمی امیدوار کو نشانہ بنایا اور کہا کہ حیرت کی بات ہے کہ جو شخص زندگی بھر آر ایس ایس کے نظریات پر عمل کرتا رہا ہے وہ سردار پٹیل کے مجسمے نصب کر رہا ہے جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ یا تو اس شخص ( مودی ) نے تاریخ نہیں پڑھی ہے اور نہ ہی وہ سردار پٹیل کے خیالات سے واقف ہے ۔ انہوں نے آر ایس ایس پر سردار پٹیل کے خیالات کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ پٹیل نے آر ایس ایس کو ایک زہریلی تنظیم قرار دیا تھا اور کہا تھا کہ یہ تنظیم ملک کا خاتمہ کرسکتی ہے ۔ بی جے پی پر عوام کو فرقہ وارانہ ‘ ذات پات اور علاقائی بنیادوں پر تقسیم کرنے نفرت کی سیاست کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے راہول نے کہا کہ بی جے پی ہندو ازم کی بات کرتی ہے لیکن وہ بھگود گیتا کی تعلیمات کے خلاف عمل کرتی ہے ۔

گیتا کی تعلیمات میں محبت و بھائی چارہ ہے ۔ یہ ادعا کرتے ہوئے کہ یو پی اے حکومت نے کئی اہم کامیابیاں حاصل کیں جن میں قانون حق معلومات اور لوک پال بل بھی شامل ہے ۔ انہو ںنے اپوزیشن پر الزام عائد کیا کہ اس نے کرپشن کی روک تھام میں موثر رہنے والے تقریبا چھ بلز کو پارلیمنٹ میں منظوری حاصل کرنے کا موقع فراہم نہیں کیا ۔ خواتین تحفظات بل کی عدم منظوری کیلئے اپوزیشن کو ذمہ دار قرار دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کانگریس پارٹی خواتین کو با اختیار بنانے کے عہد کی پابند ہے اور وہ نہ صرف خواتین کو لوک سبھا و ریاستی اسمبلیوں میں تحفظات فراہم کریگی بلکہ وہ انہیں وزارتوں اور سرکاری محکموں میں بھی مناسب تحفظات فراہم کریگی ۔ ریلی کے مقام تک پہونچنے سے قبل راہول گاندھی نے دھرم شالہ کے قریب تانڈہ کے مقام پر سابق فوجیوں کے اجلاس میں شرکت کی ۔ اس اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے راہول گاندھی نے مجوزہ لوک سبھا انتخابات کو نظریات کی لڑائی قرار دیا اور کہا کہ کانگریس پارٹی عوام کو با اختیار بنانے میں یقین رکھتی ہے تو اپوزیشن جماعت ملک میں صرف دولتمندوں کی نمائندگی کرتی ہے ۔

یو پی اے کے دس سالہ اقتدار کو ترقی کا دور قرار دیتے ہوئے راہول گاندھی نے کہا کہ اس دور میں 15 کروڑ عوام کو خط غربت سے اوپر لایا گیا ہے ۔ انہوں نے قومی ضزانت روزگار اسکیم کی منظوری ‘ فوڈ سکیوریٹی بل کی منظوری ‘ آر ٹی آئی ایکٹ اور حصول اراضیات قانون کا بھی حوالہ دیا ۔ یہ واضح کرتے ہوئے کہ وہ محض بلند بانگ دعوے کرنے میں یقین نہیں رکھتے راہول نے کہا کہ وہ صرف یہ وعدہ کرتے ہیں کہ وہ عوام کے مسائل کو حل کرنے کیلئے سنجیدہ کوششیں کرینگے ۔ سابق فوجیوں اور دیہاتی عوام سے جذباتی وابستی پیدا کرنے کی کوشش کرتے ہوئے راہول نے کہا کہ یو پی اے حکومت نے سابق فوجیوں کیلئے ایک رینک ایک تنخواہ کے مطالبہ کو قبول کیا جو پچیس سال سے زیر التوا تھا ۔ اس نے خواتین کا خیال کرتے ہوئے سبسڈی والے گیس سلینڈرس کے کوٹہ میں اضافہ کیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی ترقی میں خواتین اور نوجوانوں کے رول کو بڑھانے کیلئے کانگریس نے پنچایتی راج اداروں کو مستحکم کیا ہے ۔ کانگریس چاہتی ہے کہ سماج کے تمام طبقات خاص طور پر خواتین اور نوجوانوں کو ترقی ملے اور ملک کے 70 کروڑ عوام کو مناسب آمدنی والے گروپ میں شامل کیا جائے ۔ انہوں نے بی جے پی پر الزام عائد کیا کہ وہ یو پی اے حکومت کی اسکیمات کا سہرا اپنے سر پر لے رہی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT