Tuesday , December 11 2018

سرکاری امداد میں بھی بی جے پی کی فرقہ پرستی

جموں، 10 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) جموں وکشمیر کی وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کی جانب سے 2016 ء کی کشمیر ایجی ٹیشن کے دوران ہلاک ہونے والے شہریوں کے ورثاء کو ایکس گریشیا ریلیف دینے کے اعلان کے ایک روز بعد بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) ممبر اسمبلی ست شرما نے سال 2008 کی امرناتھ ایجی ٹیشن کے دوران سرمائی دارالحکومت جموں میں ہلاک ہوئے شہریوں کے ورثاء کو بھی ایکس گریشیا دینے کا مطالبہ کیا ہے ۔مسٹر شرما نے ریاستی اسمبلی میں گورنر کے خطاب پر بحث کے دوران کہا ‘جس طرح 2016 ء کی کشمیر ایجی ٹیشن کے دوران ہلاک ہونے والے شہریوں کے ورثاء کے حق میں ایکس گریشیا ریلیف اور سرکاری نوکری دینے کا اعلان کیا گیا، اسی طرز پر 2008 ء میں گرمائی کشیدگی کے دوران جموں میں ہلاک ہونے والے افراد کے ورثاء کی بھی مدد کی جانی چاہیے ‘۔ انہوں نے کہا ‘اگر حکومت 2016 ء کی ایجی ٹیشن کے دوران ہلاک ہونے والے شہریوں کے کنبوں کو معاوضہ دینے کیلئے تیار ہے تو جموں میں ہلاک ہونے والے شہریوں کے ورثاء کو یہ معاوضہ کیوں نہیں دیا جاسکتا ہے ‘۔بی جے پی ممبر اسمبلی نے حکومت کی سرزنش کرتے ہوئے کہا کہ ایسے اقدامات نہیں اٹھائے جانے چاہیے جن کی وجہ سے سیکورٹی فورسز کا حوصلہ پست ہوتا ہو’۔ خیال رہے کہ محبوبہ مفتی نے پیر کے روز 2016 ء کی ایجی ٹیشن میں سیکورٹی فورسز کی کاروائی میں ہلاک ہونے والے افراد کے ورثاء کو 5 لاکھ روپے بطور ایکس گریشیا دینے کا اعلان کیا۔

TOPPOPULARRECENT