Thursday , August 16 2018
Home / ہندوستان / سرکاری بینکوں کو خانگیانے کی ضرورت:فکی

سرکاری بینکوں کو خانگیانے کی ضرورت:فکی

نئی دہلی، 19 فروری (سیاست ڈاٹ کام ) ایوان صنعت و تجارت (فکی) نے پنجاب نیشنل بینک (پي این بی) میں ہونے والے تقریباً 11،400 کروڑ روپے کے گھپلے کے درمیان آج سرکاری بینکوں کی نجکاری کئے جانے کی ضرورت بتاتے ہوئے کہا کہ گزشتہ 11 سال سے بینکوں کا باز سرمایہ کاری (ری کیپٹلائزیشن) کی جا رہی ہے لیکن اس کا اثر محدود ہے ۔صنعتی تنظیم ایسوچیم کے سرکاری بینکوں کی نجکاری کئے جانے کے مطالبہ کے بعد فکی نے بھی یہاں جاری بیان میں اسی طرح کی ضرورت بتاتے ہوئے کہا کہ ہندوستان کو سماجی و اقتصادی ترقی کے لئے پائیدار اعلی ترقی درکار ہے جو ایک مضبوط مالی نظام کے بغیر ممکن نہیں۔اس نے کہا کہ ہندوستانی بینکنگ نظام میں حکومت کے بینکوں کا حصہ تقریبا 70 فیصد ہے ۔ خطرے میں پھنسے اثاثوں میں اضافہ کی وجہ سے ، ان پر دباؤ بڑھ گیا ہے ۔ حکومت گزشتہ 11 سال میں سرمایہ بندی کے تحت 2.6 لاکھ کروڑ روپے کی سرمایہ کاری کر چکی ہے ، لیکن سرکاری بینکوں کی مالی حالت پر اس کا محدود اثر ہوا ہے ۔فکی کا خیال ہے کہ سرکاری بینکوں کا باز سرمایہ کاری ہی اس کا محض اس کا ایک مستقل حل نہیں ہے ۔ اس وقت تک یہ مؤثر نہیں ہوگا جب تک کہ گورننس، پیداور، جوکھم انتظام، ماہر ورکرز، کسٹمر سروس وغیرہ سے منسلک مسائل کو حل نہیں کیا جاتا۔انہوں نے کہا کہ ان بینکوں کی خراب کارکردگی پر غور کرنا چاہئے ، حکومت کا ریوینیو بچے گا جو ترقیاتی کاموں میں استعمال کیا جائے گا۔ اس کا کہنا ہے کہ بینکاری کے شعبے کے وقت کی مانگ کے پیش نظر حکومت کو فکی کی تجاویز پر غور کرنا چاہیے ۔

TOPPOPULARRECENT