Saturday , November 25 2017
Home / شہر کی خبریں / سرکاری دفاتر میں برقی استعمال کا حساب ، پری پیڈ میٹرس کی تنصیب ، کروڑہا روپئے وصول طلب

سرکاری دفاتر میں برقی استعمال کا حساب ، پری پیڈ میٹرس کی تنصیب ، کروڑہا روپئے وصول طلب

حیدرآباد ۔ 17 ۔ اگست : ( سیاست نیوز ) : سرکاری دفاتر میں برقی کے استعمال کو جوابدہ اور بلز کی وصولی کو باقاعدہ بنانے کے لیے پری پیڈ میٹرس لگائے جارہے ہیں ۔ وقت پر ری چارج نہ کرانے کی صورت میں سرکاری دفاتر میں برقی گل ہوجائے گی ۔ جہاں تک پری پیڈ کی بات ہے یہ سیل فون کی خدمات تک محدود تھا آہستہ آہستہ ٹیلی ویژن کنکشن تک توسیع کر گیا اب برقی بلز کے معاملے میں بھی اس سسٹم پر عمل کرنے کا ڈسکام نے فیصلہ کیا ہے ۔ برقی استعمال کرتے ہوئے بلز ادا نہ کرنے والے سرکاری دفاتر کو راستے پر لانے کے لیے نئے نظام پر عمل کیا جارہا ہے ۔ ریاست کے تمام سرکاری دفاتر میں پری پیڈ میٹر لگانے کا فیصلہ ہوگیا ہے ۔ پہلے مرحلے میں تجربہ کے طور پر ایس پی ڈی سی ایل کے حدود میں واقع سرکاری دفاتر میں اس پر عمل آوری ہوگی ۔ ایس پی ڈی سی ایل کے حدود میں 19ہزار سنگل فیز ۔ 6500 تھری فیز سرکاری کنکشن ہیں گذتہ تین ماہ کے دوران 600 سنگل فیز کنکشنس کو پری پیڈ میٹر لگا دیا گیا ہے ۔ محکمہ کی جانب سے آئندہ ایک ماہ میں تمام سرکاری برقی کنکشن کو پری پیڈ میٹرس سے مربوط کرنے کی منصوبہ بندی تیار کی گئی ہے ۔ ریاست میں ایس پی ڈی سی ایل (حیدرآباد ) کے حدود میں واقع سرکاری دفاتر 1566.55 کروڑ روپئے اور این سی پی ڈی ایل (ورنگل ) کے حدود میں واقع سرکاری دفاتر 849.69 کروڑ جملہ 22416.22 کروڑ روپئے کے برقی بقایا جات ہیں اس کی ادائیگی میں سرکاری دفاتر کی جانب سے ٹال مٹول کی پالیسی اپنائی جارہی ہے ۔ برقی بقایا جات کی وصولی اور وقت پر بلز کی ادائیگی کو یقینی بنانے کے لیے پری پیڈ بلز وصول کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ پری پیڈ میٹرینگ سسٹم کے تحت سرکاری دفاتر کو پہلے بلز ادا کرنا پڑے گا ۔ چھ ماہ کے دوران برقی کے استعمال کا اندازہ کرتے ہوئے ایک ماہ کا بل اڈوانسڈ ادا کرتے ہوئے میٹر کو چارج کرنا ہوگا ۔ جتنا بل ادا کیا گیا اتنی برقی استعمال کرنے کے بعد خود بہ خود میٹر رک جائے گا ۔ تاہم میٹر میں لگائے گئے خصوصی بٹن کے ذریعہ 48 گھنٹوں تک جنگی خطوط پر برقی سربراہ ہوگی ۔ اس دوران میٹر کو ری چارج کرنا لازمی ہوگا بصورت دیگر برقی سربراہی بند ہوجائے گی ۔ اس سسٹم میں ڈبل موڈ پری پیڈ اور پوسٹ پیڈ میٹرس ہوں گے تاہم سرکاری دفاتر میں پری پیڈ میٹرس ہی لگائے جائیں گے ۔ سرکاری دفاتر میں یہ نئے نظام کی کامیابی کے بعد برقی کے عام صارفین کے لیے بھی اس سسٹم کو لازمی بنایا جائیگا ۔ جس سے نہ صرف برقی کی بچت ہوگی ۔ فضول برقی کے استعمال پر بھی روک لگے گی اور محکمہ برقی کی آمدنی میں اضافہ ہوگا ۔ برقی چوری اور دوسری بے قاعدگیوں کا خاتمہ ہوجائیگا ۔۔

TOPPOPULARRECENT