Tuesday , September 25 2018
Home / شہر کی خبریں / سرکاری محکمہ جات میں اردو کے استعمال کی ہدایت

سرکاری محکمہ جات میں اردو کے استعمال کی ہدایت

بیگم پیٹ میں سائن بورڈ پر اردو مذاق کا موضوع
حیدرآباد ۔ 11 ۔ اپریل (سیاست نیوز) حکومت نے تمام سرکاری محکمہ جات کو ہدایت دی ہے کہ تلگو کے بحیثیت پہلی سرکاری زبان اور اردو کو دوسری سرکاری زبان کی حیثیت سے عمل آوری کو یقینی بنائے۔ اس سلسلہ میں جی اے ڈی کی جانب سے تمام محکمہ جات کے سکریٹریز کو ہدایت جاری کی گئی۔ احکامات میں کہا گیا ہے کہ حکومت نے تلگو کو سرکاری زبان کا درجہ دیا ہے جبکہ اردو کو ریاست میں دوسری سرکاری زبان کا درجہ دیا گیا۔ تمام محکمہ جات کو سائن بورڈس اور عہدیداروں کے نیم پلیٹس میں تلگو کے ساتھ اردو کو بھی شامل کیا جائے۔ حکومت کی اسکیمات کے سلسلہ میں سنگ بنیاد یا پھر افتتاحی تقاریب کے کتبہ میں تلگو اور اردو کو شامل کرنے کی ہدایت دی گئی۔ پرنسپل سکریٹری جی اے ڈی آدھر سینا نے اس سلسلہ میں تمام محکمہ جات کو رہنمایانہ خطوط جاری کئے۔ سکریٹری اقلیتی بہبود ایم دانا کشور نے 7 اپریل کو تمام اقلیتی اداروں کو میمو جاری کیا اور انہیں اردو زبان کے استعمال کی ہدایت دی۔ تمام اقلیتی اداروں کے بورڈس اور نیم پلیٹس اردو میں تیار کرنے کی ہدایت دیتے ہوئے فوری عمل آوری کی خواہش کی گئی۔ سکریٹری نے اقلیتی اداروں، وقف بورڈ ، فینانس کارپوریشن ، اردو اکیڈیمی ، حج کمیٹی کو یہ میمو جاری کیا ہے ۔ حکومت اردو کو دوسری سرکاری زبان کا درجہ دے کر اپنی ذمہ داری کی تکمیل سمجھ رہی ہے لیکن سرکاری اداروں میں اردو زبان کے استعمال کا جائزہ لیں تو اندازہ ہوگا کہ محکمہ جات میں اردو داں ملازمین کی کمی ہے۔ بیگم پیٹ میں میٹرو ریل کی جانب سے جو سائن بورڈس نصب کیا گیا، اس میں لفظ بیگم پیٹ غلط تحریر کیا گیا ہے۔ اردو میں کسی ماہر سے تحریر حاصل کرنے کے بجائے گوگل ٹرانسلیٹر سے مدد لی گئی جس کے نتیجہ میں اردو تحریر مذاق کا موضوع بن چکی ہے۔ سرکاری اداروں میں اردو پر عمل آوری کا یہ حال ہے تو پھر خانگی اداروں کے سائن بورڈس پر اردو کب اور کس طرح شامل ہوگی۔

TOPPOPULARRECENT