Monday , November 20 2017
Home / پاکستان / سرکاری مدارس میں قرآن مجید کی تعلیم لازمی

سرکاری مدارس میں قرآن مجید کی تعلیم لازمی

طلبہ کو دینی مدارس سے دور رکھنے حکومت پاکستان کی کوشش
اسلام آباد ۔ 19 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان کی قومی اسمبلی میں آج ایک بل منظور کرتے ہوئے سرکاری اسکولس میں تعلیم حاصل کررہے پہلی تا بارہویں جماعت کے طلبہ کیلئے قرآن مجید کی تعلیم کو لازمی قرار دیا گیا ہے۔ اس کا مقصد طلبہ کو دینی مدارس سے دور رکھنا ہے۔ وزیر وفاقی تعلیم بلیغ الرحمن نے ایوان میں یہ بل پیش کیا۔ جس کے تحت پہلی تا پانچویں جماعت کے طالب علم کو قرآن مجید (ناظرہ)عربی میں پڑھایا جائے گا۔ اسی طرح چھٹی تا بارہویں جماعت کے طلبہ عربی زبان میں قرآن مجید پڑھنے کے ساتھ ساتھ اس کا سادہ اردو ترجمہ بھی پڑھیں گے۔ انہوں نے وضاحت کی کہ یہ قانون سازی صرف مسلم طلبہ کیلئے ہے۔ اس بل کو صدر ممنون حسین کی توثیق ضروری ہے جس کے بعد یہ قانونی شکل اختیار کر جائے گا۔ اس قانون کا اطلاق تمام سرکاری تعلیمی اداروں پر ہوگا لیکن صرف مسلم طلبہ کیلئے یہ لازمی رہے گا۔ ماہرین کے مطابق اس قانون سازی کا مقصد طلبہ کو دینی مدارس سے دور رکھنا ہے جہاں انہیں صرف قرآن مجید کی تعلیم دی جاتی ہے۔

پاکستان میں 30 دہشت گردوں کو سزائے موت ہوگی
اسلام آباد ۔ 19 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) پاکستانی فوجی سربراہ جنرل قمر جاوید باجوا نے 30 سخت گیر دہشت گردوں کو سزائے موت کی تعمیل کے احکامات پر دستخط کردیئے۔ متنازعہ خصوصی فوجی عدالتوں نے انہیں مختلف دہشت گردی کے مقدمات بشمول 2014ء میں فوجی پبلک اسکول واقع پشاور میں حملے میں مجرم قرار دیا۔ یہ دہشت گرد اغواء ، سپاہیوں کے قتل اور عام شہریوں کو حملوں کا نشانہ بنانے کے واقعات میں ملوث رہے ہیں۔ فوجی ترجمان نے بتایا کہ پشاور آرمی اسکول حملہ میں بھی یہ دہشت گرد ملوث تھے جہاں انہوں نے 150 سے زائد افراد کو ہلاک کردیا جن میں اکثریت اسکولی طلبہ کی تھی۔دہشت گردوں حملوں کے واقعات میں ا ضافہ کی بناء خصوصی فوجی عدالت کا احیاء عمل میں آیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT