Monday , June 25 2018
Home / شہر کی خبریں / سرکاری ملازمین سبکدوشی کی عمر 60 سال نہ کئے جانے پر تشویش کا شکار

سرکاری ملازمین سبکدوشی کی عمر 60 سال نہ کئے جانے پر تشویش کا شکار

احتجاج شروع کرنے کا منصوبہ ۔ ملازمین یونین قائدین کے طریقہ کار پر تنقید ۔ کے سی آر کی خاموشی پر ناراض

احتجاج شروع کرنے کا منصوبہ ۔ ملازمین یونین قائدین کے طریقہ کار پر تنقید ۔ کے سی آر کی خاموشی پر ناراض

حیدرآباد ۔ 8 ۔ ستمبر : ( سیاست نیوز ) : تلنگانہ ریاستی حکومت کی جانب سے ملازمین سرکار کی وظیفہ پر سبکدوشی کی حد عمر کو 58 سال سے بڑھا کر 60 سال نہ کئے جانے پر تلنگانہ کے سرکاری ملازمین میں گہری تشویش کا اظہار پایا جارہا ہے ۔ اور اس مسئلہ پر ایک منظم جدوجہد شروع کرنے پر مختلف محکمہ جات کے ملازمین اور عہدیدار بھی سنجیدگی سے غور کررہے ہیں ۔ بعض عہدیداران علاقہ تلنگانہ اور ملازمین تلنگانہ نے اپنا نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر کہا کہ تلنگانہ ملازمین یونینوں کے قائدین اپنے معمولی و ذاتی مفادات کے حصول کے لیے ملازمین کی وظیفہ پر سبکدوشی کی حد عمر میں اضافہ کے معاملہ میں بالکلیہ طور پر خاموشی اختیار کئے ہوئے ہیں ۔ ان ملازمین و عہدیداروں نے بتایا کہ تلنگانہ ملازمین کی نمائندگی کرنے والی یونینوں کے قائدین جس میں بعض قائدین عہدے حاصل کرنے میں کامیاب ہوچکے ہیں اور چند قائدین سیاسی عہدے حاصل کرنے کے لیے کوشاں ہیں ۔ سکریٹریٹ میں بعض ملازمین اور عہدیداروں نے بھی اپنا اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ سرکاری ملازمین کی وظیفہ پر سبکدوشی کی حد عمر میں اضافہ کرنے کی چیف منسٹر تلنگانہ مسٹر کے چندر شیکھر راؤ سے تمام تر امیدیں وابستہ تھیں لیکن وہ وظیفہ کی عمر میں اضافہ کرنے میں ناکام ثابت ہوئے تو چیف منسٹر آندھرا پردیش مسٹر این چندرا بابو نائیڈو ملازمین کی وظیفہ پر سبکدوشی کی عمر میں فوری طور پر اضافہ کر کے نہ صرف کامیاب ہوئے بلکہ آندھرا پردیش کے سرکاری ملازمین میں ہیرو ثابت ہوئے ۔ جب کہ تلنگانہ ملازمین کا دیرینہ حل طلب کوئی ایک مسئلہ بھی مسٹر چندر شیکھر راؤ چیف منسٹر تلنگانہ حل نہیں کرسکے ۔ حقیقت تو یہ ہے کہ یہی مسٹر چندر شیکھر راؤ نے اقتدار حاصل ہونے سے قبل تلنگانہ کے تمام ملازمین کو اس بات کا تیقن دیا تھا کہ وہ ملازمین کے تمام مطالبات اقتدار حاصل ہونے کے ساتھ ہی حل کردیں گے ۔ لیکن آج زائد از چار ماہ ہونے کے باوجود مسٹر چندر شیکھر راؤ نے کوئی ایک مسئلہ بھی حل نہیں کیا ۔ ان ہی ملازمین کے مطابق بتایا جاتا ہے کہ سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں اضافہ کے مسئلہ پر پے ریویژن سفارشات پر اب تک عمل آوری نہیں کی گئی ۔ تلنگانہ سرکاری ملازمین کے لیے ہیلت کارڈز کی اجرائی پر بھی چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ کوئی توجہ نہیں دے رہے ہیں اور ساتھ ہی ساتھ وظیفہ پر سبکدوشی کی حد عمر میں اضافہ کے مسئلہ پر اپنی خاموشی اختیار کئے ہوئے ہیں ۔ سکریٹریٹ کے بعض ملازمین و عہدیداروں نے بتایا کہ تلنگانہ ین جی اوز کی قیادت کرنے والے ایک قائد یونین قیادت سے سبکدوشی کے بعد ٹی آر ایس میں شمولیت اختیار کر کے اعلی عہدے پر فائز ہوگئے ایک اور یونین کی قیادت کرنے والے قائد پارٹی ٹکٹ حاصل کر کے اسمبلی رکن بن گئے ۔ موجودہ ٹی ین جی اوز یونین کی قیادت کرنے والے قائد بھی بہت جلد سیاسی عہدہ حاصل کرنے کے لیے کوشاں ہیں ۔ اس طرح ان ملازمین نے بتایاکہ تلنگانہ ملازمین یونین اپنے ذاتی مفادات کے حصول میں مصروف دکھائی دے رہے ہیں ۔ لہذا بعض ملازمین و عہدیدار بہت جلد چیف منسٹر سے ملاقات کر کے نمائندگی کرنے کا اظہار کیا ۔

TOPPOPULARRECENT