Wednesday , June 20 2018
Home / ہندوستان / سرینگر میں تیسرے دن بھی کرفیو جیسی پابندیاں

سرینگر میں تیسرے دن بھی کرفیو جیسی پابندیاں

سرینگر۔ 11 فروری (سیاست ڈاٹ کام) پارلیمنٹ پر حملے کے مجرم محمد افضل گرو کی دوسری برسی کے موقع پر احتجاج کے دوران سکیورٹی فورسیس کی فائرنگ میں ایک نوجوان کی ہلاکت کے تیسرے روز آج بھی ضلع بارہمولہ کے علاقہ پلہلان اور سرینگر کے چند حصوں میں کرفیو جیسی پابندیاں برقرار رہیں۔ پولیس کے ایک ترجمان نے کہا کہ شمالی کشمیر کے بارہمولہ میں جہاں ا

سرینگر۔ 11 فروری (سیاست ڈاٹ کام) پارلیمنٹ پر حملے کے مجرم محمد افضل گرو کی دوسری برسی کے موقع پر احتجاج کے دوران سکیورٹی فورسیس کی فائرنگ میں ایک نوجوان کی ہلاکت کے تیسرے روز آج بھی ضلع بارہمولہ کے علاقہ پلہلان اور سرینگر کے چند حصوں میں کرفیو جیسی پابندیاں برقرار رہیں۔ پولیس کے ایک ترجمان نے کہا کہ شمالی کشمیر کے بارہمولہ میں جہاں ایک 19 سالہ نوجوان فاروق احمد بھٹ دوشنبہ کو احتجاج کے دوران پولیس فائرنگ میں ہلاک اور اس کا ایک ساتھی زخمی ہوگیا تھا۔ اس واقعہ کے خلاف عوامی احتجاج کے بعد پولیس نے کرفیو جیسی پابندیاں عائد کیا تھا۔ عوام کو بڑی سڑکوں پر جمع ہونے سے روکنے دفعہ 144 نافذ کرتے ہوئے گلیوں اور ذیلی راستوں پر پولسی اور سکیورٹی فورسیس کی بھاری جمعیت تعینات کی گئی تھیں۔ مائسوما پولیس اسٹیشن کے تحت تجارتی علاقہ لال چوک کے علاوہ نوہٹا پولیس اسٹیشن کے حدود اور صفا کدل، مہاراج گنج، خانیار، رائینواری میں اس وقت یہ پابندیاں عائد کی گئی تھیں، جب علیحدگی پسندوں نے افضل گرو کی دوسری برسی کے موقع پر احتجاج کے ساتھ گرو کے بقایاجات کی واپسی کا مطالبہ کرنے کا منصوبہ بنایا تھا۔

TOPPOPULARRECENT