Wednesday , November 21 2018
Home / Top Stories / سرینگر میں دوسرے دن بھی پابندیاں، جامع مسجد میں نماز جمعہ نہ ہوسکی

سرینگر میں دوسرے دن بھی پابندیاں، جامع مسجد میں نماز جمعہ نہ ہوسکی

سری نگر 19اکتوبر (سیاست ڈاٹ کام ) جموں وکشمیر کے گرمائی دارالحکومت سری نگر کے مختلف حصوں بالخصوص پائین شہر میں جمعہ کو مسلسل دوسرے دن بھی کرفیو جیسی پابندیاں نافذ رہیں۔ پابندیوں کی وجہ سے پائین شہر کے نوہٹہ میں واقع چھ صدی پرانی جامع مسجد میں مسلسل دوسرے جمعہ کو بھی نماز جمعہ ادا نہ ہوسکی۔ شہر میں پابندیاں مشترکہ مزاحمتی قیادت سید علی گیلانی، میرواعظ مولوی عمر فاروق اور محمد یاسین ملک کی طرف سے بقول ان کے وادی میں سرکاری ظلم و زیادتیوں ، بہیمانہ ہلاکتوں، بلا وجہ گرفتاروں ، پبلک سیفٹی ایکٹ کے اطلاق ، مکانوں اور جائیداد کی تباہی ، طلبا کی ہراسانی اور صحافیو ں پر حملوں و دیگر تشدد آمیزیوں کے خلاف دی گئی احتجاجی مظاہروں کی کال کے پیش نظر دوسرے دن بھی جاری رکھی گئیں۔ وادی میں جمعرات کو لشکر طیبہ کے 2 جنگجوؤں اور ایک عام شہری کی ہلاکت کے خلاف مکمل ہڑتال کی گئی تھی جس کے دوران احتجاجی مظاہروں کے خدشے کے پیش نظر سری نگر کے پائین شہر کے بیشتر حصوں میں کرفیو جیسی پابندیاں نافذ رکھی گئی تھیں۔ سری نگر میں جمعہ کو تمام تعلیمی ادارے سرکاری احکامات پر بند رہے ۔ اس کے علاوہ کشمیر یونیورسٹی اور جنوبی کشمیر کے اونتی پورہ میں واقع اسلامک یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی میں درس وتدریس کا عمل معطل رہا۔سرکاری ذرائع نے بتایا کہ پائین شہر کے ایم آر گنج، نوہٹہ، رعناواری، صفا کدل اور خانیار میں جمعہ کو دفعہ 144 سی آر پی سی کے تحت پابندیاں نافذ رہیں۔

TOPPOPULARRECENT