Monday , December 18 2017
Home / ہندوستان / سرینگر میں چوٹی کاٹنے کے واقعات کیخلاف پرتشدد احتجاج

سرینگر میں چوٹی کاٹنے کے واقعات کیخلاف پرتشدد احتجاج

سرینگر۔ 11 اکتوبر (سیات ڈاٹ کام) چوٹی کاٹنے کے بڑھتے ہوئے واقعات کے خلاف آج وادیٔ کشمیر میں احتجاج کیا گیا جو پرتشدد ہوگیا۔ شہر کے علاقہ بٹمالو میں احتجاجیوں نے پولیس کی مبینہ بے عملی کے خلاف سنگباری کی چوٹی کاٹنے والوں کو تازہ حملوں کے باوجود جو آج علی الصبح ہوئے تھے، گرفتار نہیں کیا جاسکا۔ پولیس نے احتجاجیوں کو منتشر کرنے کیلئے طاقت کا استعمال کیا حالانکہ احتجاجیوں مظاہرین کو پیچھے کرکے بھگادیا گیا لیکن بازار کے علاقہ میں تازہ حملے کے خلاف بطور احتجاج بند منایا گیا۔ چوٹی کاٹنے کے واقعات کی وجہ سے اس علاقہ میں خوف پھیل گیا جس کی بناء پر احتجاجی مظاہرے ہورہے ہیں۔ خاص طور پر خواتین، خاطیوں کے حملوں پر برہمی ظاہر کررہی ہیں۔

جنوبی کشمیر میں دو کانسٹبل گرفتار
سرینگر،11اکتوبر(سیاست ڈاٹ کام)جنوبی کشمیر کے شوپیان میں حزاب المجاہدین کیلئے کام کرنے اور ہتھیاروںکی سپلائی کرنے والے دو کانسٹلبوں کو حراست میں لیا گیا ہے۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ دونوں کانسٹبل زمینی سطح پر حزب ا لمجاہدین کیلئے کام کررہے تھے ۔ ذرائع نے یو این آئی کو بتایا کہ مزید تفتیش جاری ہے ۔تفصیلات بتاتے ہوئے انہوں نے نے بتایا کہ گزشتہ9اکتوبر کو شوپیان میں سرکٹ ہاؤس کے نزدیک باڑھ لگانے کے دوران ایک نوجوان مشتبہ حالت میں گھوم رہاتھا جسے گرفتار کرلیا گیا،گرفتارنوجوان کی شناخت عادل احمد کے طور پر کی گئی ہے ۔پولیس نے اس کے قبضہ سے 25کارتوس اور اے کے -47رائفل بھی برآمد کی ہے ۔ پوچھ گچھ کے دوران عادل احمد نے قبول کیا کہ وہ ایچ ایم اوجی ڈی کے طور پر کام کررہاتھا۔

TOPPOPULARRECENT