Sunday , December 17 2017
Home / ہندوستان / سرینگر میں ’’چوٹی کاٹنے کے واقعات ‘‘کے خلاف طالبات کا شدید احتجاج

سرینگر میں ’’چوٹی کاٹنے کے واقعات ‘‘کے خلاف طالبات کا شدید احتجاج

سرینگر۔ 7 اکتوبر (سیاست ڈاٹ کام)جموں وکشمیر کے گرمائی دارالحکومت سرینگرکے مولانا آزاد روڑ پر واقع ویمنس کالج کی طالبات نے آج وادی میں خواتین کی چوٹیاں کاٹنے کے بڑھتے ہوئے واقعات کے خلاف شدید احتجاج کیا۔ ویمنس کالج کے علاوہ کشمیر یونیورسٹی میں بھی طالبات کی جانب سے احتجاجی مظاہرے کئے گئے ۔ وادی میں چوٹی کاٹنے کے چار نئے واقعات سامنے آئے ہیں۔ ویمنس کالج میں زیر تعلیم سینکڑوں طالبات نے ہفتہ کے روز کالج کے احاطے میں چوٹیاں کاٹنے کے واقعات کے خلاف شدید احتجاج کیا۔ احتجاجی طالبات نے یہ کہتے ہوئے ریاستی حکومت اور پولیس کے خلاف شدید نعرے بازی کی کہ وہ خواتین کے بال کاٹنے کے تشویشناک واقعات پر خاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں ۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ چوٹیاں کاٹنے کے شرمناک جرم میں ملوث افراد کو فوری طور پر کیفر کردار تک پہنچایا جائے ۔ احتجاجی طالبات نے الزام لگایا کہ ریاستی پولیس چوٹیاں کاٹنے کے خاطیوں کیساتھ ملی ہوئی ہے ۔ ایک احتجاجی طالبہ نے نامہ نگاروں سے کہا کہ بال کاٹنے کے واقعات نے کشمیر میں ہر طرف دہشت مچا رکھی ہے ۔ ہماری مانگ ہے کہ ان واقعات میں ملوث لوگوں کو فوری طور پر پکڑا جائے ۔ محبوبہ مفتی (وزیراعلیٰ) کہاں ہیں۔ وہ لداخ میں اسکوٹیاں بانٹ رہی ہیں۔ کیا ان واقعات کا سنجیدہ نوٹس لینا ان کی ذمہ داری نہیں ہے ؟۔ ایک گھنٹے تک احتجاج کرنے کے بعد طالبات پرامن طور پر منتشر ہوئیں۔دوسری جانب کشمیر یونیورسٹی میں بھی طلباء نے چوٹیاں کاٹنے کے بڑھتے ہوئے واقعات کے خلاف اپنا احتجاج درج کیا۔ احتجاجی طلباء نے اپنے ہاتھوں میں پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے جن پر ان واقعات کے خلاف احتجاجی نعرے درج تھے ۔وادی بالخصوص جنوبی کشمیر میں خواتین کی پراسرار طور پر چوٹیاں کاٹنے کا سلسلہ تھمنے کا نام ہی نہیں لے رہا ہے ۔ ریاست بھر میں چوٹی کاٹنے کے تقریباً100 واقعات سامنے آنے کے بعد بھی مضبوط انٹیلی جنس نیٹ ورک کیلئے مشہور جموں وکشمیر پولیس ان میں ملوث افراد کا پتہ لگانے میں تاحال ناکام رہی ہے ۔ریاستی پولیس نے چوٹی کاٹنے کے واقعات میں ملوث لوگوں کے بارے میں مصدقہ اطلاع فراہم کرنے والے شخص کو 6 لاکھ روپے بطور انعام دینے کا اعلان کر رکھا ہے۔اس دوران علیحدگی پسندوں نے آج اپیل کی کہ چوٹی کاٹنے کے واقعات کیخلاف ریاست میں پیر کو بند منایا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT