Tuesday , September 25 2018
Home / کھیل کی خبریں / سری لنکا اور پاکستان کے درمیان آج دلچسپ فائنل متوقع

سری لنکا اور پاکستان کے درمیان آج دلچسپ فائنل متوقع

٭ آفریدی کو روکنے ملنگا اور منڈیس پر لنکا کا انحصار ٭ گل، شہزاد اور شرجیل کے زخمی ہونے سے پاکستان کو مسائل

٭ آفریدی کو روکنے ملنگا اور منڈیس پر لنکا کا انحصار
٭ گل، شہزاد اور شرجیل کے زخمی ہونے سے پاکستان کو مسائل

میرپور ۔ 7 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) دفاعی چمپیئن پاکستان کو کل یہاں سری لنکا کے خلاف کھیلے جانے والے ایشیاء کپ کے فائنل سے قبل اپنے دو کلیدی کھلاڑیوں آل راونڈر شاہد آفریدی اور فاسٹ بولر عمرگل کے زخمی ہونے کے مسائل کا سامنا ہے۔ آفریدی جنہوں نے ٹورنمنٹ میں پاکستانی ٹیم کی قسمت بدلنے والی دو غیرمعمولی اننگز کھیلی ہیں۔ تاہم بنگلہ دیش کے خلاف آخری گروپ مرحلہ کے مقابلہ میں وہ بیٹنگ کے دوران پیر کی تکلیف میں مبتلاء ہوئے ہیں اور کل مقابلے کے عین آغاز سے قبل تک فائنل میں ان کی شمولیت کے متعلق غیریقینی صورتحال موجود ہے۔ علاوہ ازیں فاسٹ بولر عمر گل کے ہمراہ اوپنر سرجیل خان اور احمد شہزاد بھی صدفیصد فٹ نہیں ہیں۔ سری لنکائی ٹیم جس نے ٹورنمنٹ کے افتتاحی مقابلہ میں پاکستان کو شکست دینے کے علاوہ تمام ٹورنمنٹ میں ناقابل شکست ہے

جس سے اس کے کھلاڑیوں کے حوصلے بلند ہیں۔ پاکستانی ٹیم کیلئے سری لنکا کے سینئر بیٹسمین کمارا سنگاکارا کا شاندار فام اور فاسٹ بولر لستھ ملنگا کے ہمراہ اسپنر اجنتا منڈیس کا سامنا کرنا اصل چیلنج ہوگاکیونکہ وہ ملنگا ہی تھے جنہوں نے افتتاحی مقابلہ میں اہم موقع پر حریف کپتان مصباح الحق اور شاہد آفریدی کی وکٹ حاصل کرتے ہوئے اپنی ٹیم کو کامیابی سے ہمکنار کیا تھا جبکہ کماراسنگاکارا گذشتہ روز صرف بنگلہ دیش کے خلاف ٹورنمنٹ میں ناکام ہوئے ہیں جبکہ دیگر 3 مقابلوں میں انہوں نے ایک سنچری اور دو نصف سنچریاں اسکور کی ہیں۔

پاکستانی ٹیم کی کامیابی کا انحصار پھر ایک مرتبہ شاہد آفریدی پر ہوگا جنہوں نے ہندوستان کے خلاف 34 اور بنگلہ دیش کے خلاف 59 رنز کی ایسی اننگز کھیلی ہے جو ٹیم اور کھلاڑی کیلئے ضروری ہونے کے علاوہ یادگار بھی ہیں۔ ہندوستانی امیدوں کو ختم کرنے کے بعد بوم بوم آفریدی نے بنگلہ دیش کے خلاف برق رفتار نصف سنچری اسکور کرتے ہوئے ٹیم کو تاریخ ساز نشانہ 326 رنز کا کامیاب تعاقب کرانے میں اپنا رول ادا کیا ہے جس میں انہوں نے 18 گیندوں میں نصف سنچری بھی اسکور کی ہے۔ آفریدی کی جانب سے یہ دو یادگار اننگز ایسے موقع پر کھیلی گئی ہیں

جس کی ٹیم کے علاوہ خود آفریدی کو بھی اشد ضرورت تھی کیونکہ حالیہ عرصہ میں آفریدی پر مظاہروں کے عدم استقلال کی وجہ سے کافی تنقیدیں ہورہی تھیں۔ آفریدی کے بموجب ہندوستان اور بنگلہ دیش کے خلاف یادگار اننگز ان کیلئے اور ٹیم کیلئے بھی ضروری تھی۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہر دن بیاٹ کے ساتھ ٹیم کو کامیابی سے ہمکنار نہیںکیا جاسکتا ہے لہٰذا وہ بولنگ پر بھی توجہ مرکوز کرچکے ہیں۔ آفریدی کے شاندار فام کو روکنے کیلئے سری لنکا اپنے فاسٹ بولر لستھ ملنگا اور اجنتا منڈیس پر انحصار کرے گی۔ سری لنکا کیلئے سینئر بیٹسمین مہیلا جئے وردھنے کا ناقص فام تشویش کا باعث ہے کیونکہ انہوں نے 4 مقابلوں کی 3 اننگز میں صرف 36 رنز اسکور کئے ہیں جبکہ پاکستان بھی اپنے کپتان مصباح الحق کو رنز اسکور کرتا ہوا دیکھنے کا خواہاں ہے۔

TOPPOPULARRECENT