Thursday , November 23 2017
Home / Top Stories / سری لنکا میں عام انتخابات، راجہ پکسے برسراقتدار آنے کیلئے پرامید

سری لنکا میں عام انتخابات، راجہ پکسے برسراقتدار آنے کیلئے پرامید

کولمبو ۔ 17 اگست (سیاست ڈاٹ کام) سری لنکا میں عوام پیر کو منعقد ہونے والے عام انتخابات میں ملک کی نئی پارلیمان کا انتخاب کر رہے ہیں۔ ملک کے سابق صدر مہندا راجہ پکسے ان انتخابات میں فتح اور ملک کا وزیراعظم بننے کا خواب لیے میدان میں اترے ہیں۔ وہ جاریہ سال جنوری میں دس برس تک برسرِ اقتدار رہنے کے بعد صدارتی انتخاب میں وزیرِ صحت میتھرئی پالا سری سینا سے شکست کھا گئے تھے۔ اب مہندا راجہ پکسے کی خواہش ہے کہ سری لنکا فریڈم پارٹی انتخابات جیتنے کی صورت میں ان کی قیادت میں حکومت بنائے جبکہ جماعت کے موجودہ قائد اور ملک کے صدر سری سینا کا کہنا تھا کہ وہ ایسے کسی قدم کی اجازت نہیں دیں گے۔ ملک میں انتخابی مہم تقریباً پرسکون ہی رہی اور تشدد کے واقعات میں چار افراد ہلاک ہوئے۔ سری لنکا میں کل ڈیڑھ کروڑ افراد ووٹ ڈالنے کے اہل ہیں اور انتخابی نتائج منگل تک آنے کی امید ہے۔ 69 سالہ مہندا راجہ پکسے کو ملک میں 26 سال سے جاری تمل بغاوت کو فرو کرنے کی وجہ سے ملک کی سنہالی زبان بولنے والی بودھ آبادی میں بہت مقبولیت حاصل ہے۔ تاہم ان کے مخالفین ان پر ایک بدعنوان، ظالم اور مطلق العنان حکومت چلانے کا الزام لگاتے ہیں جس سے وہ انکار کرتے آئے ہیں۔ حالیہ انتخابی مہم میں سامنے آنے والے ایک خط میں سری سینا نے مہندا راجہ پکسے پر سیاسی جماعت کو یرغمال بنا لینے کا الزام بھی لگایا اور کہا کہ سوال ہی پیدا نہیں ہوتا کہ وہ انھیں وزرات عظمیٰ کے لیے نامزد کریں۔

TOPPOPULARRECENT