Tuesday , July 17 2018
Home / دنیا / سری لنکا میں منشیات کے جرائم میں ملوث افراد کو سزائے موت دینے کی منظور ی

سری لنکا میں منشیات کے جرائم میں ملوث افراد کو سزائے موت دینے کی منظور ی

کولمبو۔ 11 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) سری لنکا کی کابینہ نے اتفاق رائے سے منشیات سے متعلق جرائم میں ملوث افراد کو سزائے موت دیئے جانے کی ایکبار پھر وکالت کی ہے۔ وزیر برائے بدھسٹ آرڈر گامتی جیہ وکرما پریرا نے بتایا کہ سری لنکائی صدر میتھری پالا سیری سینا نے حال ہی میں ایک بیان دیا تھا کہ سزائے موت کو ملک میں ایک بار پھر متعارف کرنے کیلئے موصوف (سری سینا) شدید دباؤ میں ہیں۔ منشیات کی اسمگلنگ یا ان کے استعمال کو ’’سنگین جرم‘‘ قرار دیا جاتا ہے جس کا ارتکاب کرنے والوں کو سزائے موت دی جانی چاہئے جس پر کابینہ نے بھی اپنی منظوری دے دی۔ انہوں نے کہا کہ ایسے معاملات بھی سامنے آئے ہیں جہاں جیل کی سزا کاٹنے والے جیل سے ہی منشیات کا کاروبار چلا رہے ہیں لیکن اب ایسا نہیں ہوگا۔ یاد رہے کہ سری لنکا میں پھانسی کے ذریعہ سزائے موت دیئے جانے کا سلسلہ 1976 سے ترک کردیا گیا تھا اور ایسے مجرمین جنہیں سزائے موت دی جانے والی تھی، ان کی سزاؤں کی عمر قید میں تبدیل کردیا گیا تھا۔
پولیس اہلکار کا قاتل بدھ راہب گرفتار
کولمبو۔ 11 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) سری لنکا میں ایک بدھسٹ راہب کو مبینہ طور پر ایک پولیس اہلکار کو ہلاک کرنے کی پاداش میں گرفتار کرلیا۔ متوفی اہلکار ، راہب کو جنسی استحصال کے معاملے میں ملوث ہونے پر گرفتار کرنے آیا تھا۔ 37 سالہ راہب کی شناخت کوالین دھماسیرا تھیرا کی حیثیت سے ہوئی ہے جو جنوب مشرقی رتنا پورہ خطہ کے گالندہ مندر میں اکیلا رہا کرتا تھا۔ اس کیس سے متعلق تھیراکو کئی بار سمن جاری کئے گئے لیکن اس نے کوئی توجہ نہیں دی اور آج اسے گرفتار کیا جانے والا تھا۔ غیرمسلح پولیس اہلکار پر اچانک حملہ کرتے ہوئے راہب نے اس کا گلا گھونٹ دیا اور بعدازاں چاقو گھونپ دیا۔ آس پاس کے لوگوں نے جب پولیس اہلکار کی چیخوں کی آواز سنی تو فوری پولیس کو اطلاع دی تاہم زخمی اہلکار ہاسپٹل میں دوران علاج جانبر نہ ہوسکا۔ اس واقعہ پر سبھی لوگ حیرت زدہ ہیں کیونکہ کسی بھی بدھ راہب کے ہاتھوں کسی پولیس والے کے قتل کا یہ پہلا واقعہ ہے۔

TOPPOPULARRECENT