Monday , June 25 2018
Home / ہندوستان / سسوڈیا کی ریاست کے درجہ کے مسئلہ پر مرکز پر تنقید

سسوڈیا کی ریاست کے درجہ کے مسئلہ پر مرکز پر تنقید

نئی دہلی ۔24مئی سیاست ڈاٹ کام ) ڈپٹی چیف منسٹر منیش سسوڈیا نے آج مرکز پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اروند کجریوال اور لیفٹننٹ گورنر نجیب جنگ کے درمیان صف آرائی کے دوران مبینہ سب سے بڑا موقف برعکس کرلینے کا واقعہ دہلی کو مکمل ریاست کا درجہ دینے کے بارے میں ہیں ۔ انہوں نے اظہار حیرت کیا کہ بی جے پی چیف منسٹر دہلی کجریوال اور وزیراعظم نریندر

نئی دہلی ۔24مئی سیاست ڈاٹ کام ) ڈپٹی چیف منسٹر منیش سسوڈیا نے آج مرکز پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اروند کجریوال اور لیفٹننٹ گورنر نجیب جنگ کے درمیان صف آرائی کے دوران مبینہ سب سے بڑا موقف برعکس کرلینے کا واقعہ دہلی کو مکمل ریاست کا درجہ دینے کے بارے میں ہیں ۔ انہوں نے اظہار حیرت کیا کہ بی جے پی چیف منسٹر دہلی کجریوال اور وزیراعظم نریندر مودی کے درمیان ’’مقابلہ ‘‘ پر خوفزدہ کیوں ہے۔ انہوں نے کہا کہ مرکز نے گذشتہ ایک سال کے دوران کئی معاملات کے بارے میں اپنا موقف تبدیل کیا ہے لیکن سب سے بڑا واقعہ دہلی کو مکمل ریاست کا درجہ دینے کا مسئلہ ہے ۔ آخر بی جے پی کجریوال اور مودی کے درمیان مقابلہ کے سلسلہ میں اتنی خوفزدہ کیوں ہے ۔ سسوڈیا نے کہا کہ سینئر سرکاری عہدیدار شکنتلا گیلمن کو لیفٹننٹ گورنر کی جانب سے کارگذار چیف سکریٹری مقرر کرنے کے بعد برسراقتدار عام آدمی پارٹی اور لیفٹننٹ گورنر کے درمیان تنازعہ بھرپور سطح پر پہنچ گیا ہے ۔ کجریوال نے لیفٹننٹ گورنر کے اختیارات کو چیلنج کیا ہے اور ان پر الزام عائد کیا ہے کہ وہ انتظامیہ پر قبضہ کرنا چاہتے ہیں ۔ سسوڈیا نے کہا کہ تمام منصوبے ’’غداروں‘‘ کو بچانے کے ہیں جو دہلی میںبرسرکار ہیں ۔ سسوڈیا نے کہا کہ عاپ حکومت کام کرنے کے ساتھ ساتھ جدوجہد بھی کررہی ہے اور دہلی کے شہری حکومت کے کام سے خوش ہیں۔ تبادلوںاور تعینات کے پس پردہ دہلی میں شعبہ صنعت ہونے کا الزام عائد کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ان کی سبکدوشی کے بعد سیاسی کھیل کھیلا جائے گا ۔ سسوڈیا نے ذرائع ابلاغ پر بھی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ وہ جھوٹی باتیں پھیلارہے ہیں اور کجریوال کی شبیہہ مسخ کررہے ہیں تاہم اپنے تبصرہ کو جائز قرار دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہم ذرائع ابلاغ کے خلاف نہیں ہیں لیکن جھوٹی باتوں کے یقیناً مخالف ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT