سشماکی تاجکستان آمد، دہشت گردی کے خاتمہ پر زور

دوشنبے ۔ 11 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) وزیرامور خارجہ سشماسوراج یہاں اپنے تاجک ہم منصب سراج الدین مہرالدین سے ملاقات کی اور دونوں قائدین نے ترقیاتی اعانت، سائنس اور ٹکنالوجی، صحت ، دفاع اور سیکوریٹی کے شعبوں میں قریبی باہمی روابط کو بڑھاوا دینے پر غوروخوض کیا۔ دونوں قائدین کی ملاقات شنگھائی کوآپریشن آرگنائزیشن کی کونسل سربراہان حکومت کے دو روزہ اجتماع کے موقع پر ہوئی۔ وزارت امورخارجہ کے ترجمان رویش کمار نے کہا کہ دونوں قائدین نے مختلف شعبوں میں ہمارے قریبی رشتے میں شدت پیدا کرنے کے بارے میں تبادلہ خیال کیا۔ قبل ازیں دن میں وزیرخارجہ سشماکی آج تاجکستان کے دارالحکومت دوشنبے میں آمد ہوئی۔ دریں اثناء وزارت امور خارجہ کے ترجمان رویش کمار نے بھی سشماسوراج کی تاجکستان کے خوبصورت دارالحکومت دوشنبے پہنچنے کی توثیق کی اور کہا کہ آئندہ دو روز تک موصوفہ ایس سی او سے متعلق اجلاس میں شرکت کریں گی۔ ساتھ ہی ساتھ وہ تاجک قائدین سے دورخی بات چیت کے علاوہ تاجکستان میں آباد ہندوستانی برادری سے ملاقات بھی کریں گی۔ بتایا جاتا ہے کہ ایس سی او کی کونسل آف ہیڈس آف گورنمنٹ (CHG) بات چیت کے دوران شام، افغانستان اور کوریائی جزیرہ نما میں پائی جانے والی صورت حال پر بھی تبادلہ خیال کیا جائے گا۔ یاد رہے کہ جون 2017ء میں ہندوستان کے ایس سی او کے کل وقتی رکن بننے کے بعد سی ایچ جی کا یہ دوسرا اجلاس ہے۔ قبل ازیں ہندوستان محض ایک مبصر تھا اور صرف وزارتی سطح کے اجلاس میں ہی شرکت کیا کرتا تھا جن کی زیادہ تر توجہ صرف یوریشین خطہ میں معاشی تعاون اور سیکوریٹی پر مرکوز رہا کرتی تھی۔ ہندوستان کے علاوہ پاکستان کو بھی گذشتہ سال ہی ایس سی او کی کل وقتی رکنیت عطا کی گئی۔ ایس سی او کا قیام ایک چوٹی کانفرنس میں جو شنگھائی میں 2001ء کو منعقد کی گئی تھی، روس، چین، جمہوریہ کرغزستان، قازقستان، تاجکستان اور ازبکستان کے صدور کی جانب سے عمل میں آیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT