Thursday , December 14 2017
Home / شہر کی خبریں / سشما سوراج کا پارلیمنٹ میں بیان جذباتی ڈرامہ: پونم پربھاکر

سشما سوراج کا پارلیمنٹ میں بیان جذباتی ڈرامہ: پونم پربھاکر

حیدرآباد /7 اگست (سیاست نیوز) کانگریس کے سابق رکن پارلیمنٹ پونم پربھاکر نے مرکزی وزیر خارجہ سشما سوراج کے پارلیمنٹ میں دیئے گئے بیان کو جذباتی ڈرامہ قرار دیتے ہوئے للت مودی سے وصول کی گئی رقم عوام کے سامنے پیش کرنے کا مطالبہ کیا۔ انھوں نے کہا کہ بی جے پی زیر قیادت این ڈی اے حکومت پوری طرح بدعنوانیوں میں ملوث ہے۔ بدعنوانیوں کا خاتمہ کرنے اور کالا دھن وطن لانے کا وعدہ کرنے والے وزیر اعظم نریندر مودی کی خاموشی اس بات کا ثبوت ہے کہ وہ بدعنوان قائدین کی سرپرستی اور ہندوستان کو لوٹ کر فرار ہونے والے للت مودی کی حوصلہ افزائی کر رہے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ کانگریس کی جانب سے بی جے پی قائدین کی بدعنوانیوں کو منظر عام پر لانے اور اس پر مباحث کے لئے دباؤ ڈالتے ہی کانگریس کے 25 ارکان کو معطل کردیا گیا، جس کی وہ سخت مذمت کرتے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ بی جے پی اور این ڈی اے کو لوک سبھا میں اکثریت حاصل ہے، تاہم اس کا مطلب یہ نہیں کہ ان کی تاناشاہی چلے گی۔ ہندوستان ایک جمہوری ملک ہے، جب کہ نریندر مودی ایک ڈکٹیٹر کی طرح کام کر رہے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ کانگریس پارٹی سشما سوراج اور بی جے پی کے دو چیف منسٹرس کے استعفوں تک اپنا احتجاج جاری رکھے گی۔ انھوں نے کہا کہ کانگریس زیر قیادت یو پی اے حکومت میں بدعنوانیوں میں ملوث وزراء کو استعفی کی ترغیب دیتے ہوئے ہندوستانی آئین کا احترام کیا گیا تھا، جب کہ حکمراں بی جے پی قانون کو اپنے ہاتھ میں لے کر سرکاری عہدوں کا بیجا استعمال کر رہی ہے۔ انھوں نے کہا کہ مرکزی وزیر خارجہ نے ایک بھگوڑے کی بیوی کی جذباتی کہانی سناتے ہوئے پارلیمنٹ اور ملک کے عوام کو گمراہ کرنے کی کوشش کی اور یہ بھی کہا کہ اگر ان کی جگہ سونیا گاندھی بھی ہوتیں تو وہی کرتیں جو انھوں نے کیا ہے۔ پونم پربھاکر نے کہا کہ سونیا گاندھی ایسا ہرگز نہ کرتیں، بلکہ وہ تو داغدار وزیر کو استعفی دینے پر مجبور کرتیں۔

TOPPOPULARRECENT