Wednesday , December 19 2018

سعودیہ میں زائد از 800 منشیات اسمگلر گرفتار

ریاض ، 17 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) سعودی عرب میں منشیات کے مکروہ دھندے کے خلاف سخت ترین قوانین کے نفاذ کے باجود سماج دشمن عناصر کی بڑی تعداد اس قبیح کاروبار میں ملوث دکھائی دیتی ہے۔ حال ہی میں ملک میں منشیات اسمگلنگ میں ملوث عناصر کی بڑی تعداد کو حراست میں لیا گیا ہے۔ ریاض حکومت کی وزارت داخلہ کے ترجمان میجر جنرل منصور الترکی نے میڈیا کو ب

ریاض ، 17 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) سعودی عرب میں منشیات کے مکروہ دھندے کے خلاف سخت ترین قوانین کے نفاذ کے باجود سماج دشمن عناصر کی بڑی تعداد اس قبیح کاروبار میں ملوث دکھائی دیتی ہے۔ حال ہی میں ملک میں منشیات اسمگلنگ میں ملوث عناصر کی بڑی تعداد کو حراست میں لیا گیا ہے۔ ریاض حکومت کی وزارت داخلہ کے ترجمان میجر جنرل منصور الترکی نے میڈیا کو بتایا ہے کہ پچھلے تین ماہ میں پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں نے 278 سعودی باشندوں سمیت 849 افراد کو منشیات اسمگلنگ کی پاداش میں حراست میں لیا ہے جن کے قبضے سے دو ارب ریال سے زائد مالیت کی منشیات قبضے میں لی گئی ہیں۔ محروس سماج دشمن عناصرمیں سعودی عرب کے علاوہ 31 مختلف ممالک کے افراد شامل ہیں۔

ایک سوال کے جواب میں ترجمان وزارت داخلہ نے بتایا کہ سماج دشمن عناصر کی کامیاب گرفتاریوں میں پولیس کی پیشہ ورانہ مہارت اور قربانیوں کا بھی دخل ہے۔ قانون نافذ کرنے والے اداروں نے اپنی جانوں پر کھیل کر منشیات مافیا کے خلاف کامیاب آپریشن کئے۔ کرپشن مافیا کے خلاف آپریشن میں سعودی عرب کے دو پولیس ملازمین شہید اور پندرہ دیگر زخمی ہوئے جبکہ منشیات کے چار اسمگلروں کو ہلاک اور چھ کو زخمی کیا گیا۔ منصور الترکی نے کہا کہ منشیات مافیا کے قبضے سے ’’ایم وٹامن‘‘ نامی منشیات کی 12 ملین، تین لاکھ 31 ہزار، 173 گولیاں، چھ ٹن سے زیادہ مقدار میں حشیش، چھ کلو گرام ہیروئن اور شعبہ طب میں استعمال ہونے والی سکون آور گولیاں شامل ہیں۔ ملزمان کے قبضے سے مجموعی طور پر ایک کروڑ، 26 لاکھ، 84 ہزار 971 ریال نقدی اور 210 ہتھیار بھی برآمد کئے گئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT