Tuesday , August 21 2018
Home / Top Stories / سعودی خواتین کو ذاتی کاروبار کرنے شوہر یا

سعودی خواتین کو ذاتی کاروبار کرنے شوہر یا

مرد رشتہ دار کی اجازت لینے کی ضرورت نہیں : حکومت
ریاض ۔ /18 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) سعودی حکومت نے یہ اعلان کرتے ہوئے کہا کہ سعودی عرب میں خواتین اب اپنا خود کا کاروبار شروع کرسکتی ہیں ۔ شوہر یا مرد رشتہ دار کی مرضی و اجازت کے بغیر ہی سعودی خواتین تجارتی میدان میں قدم رکھنے کیلئے آزاد ہوں گی ۔ سعودی عرب میں تیزی سے فروغ پاتے خانگی شعبے کو مزید وسعت دینے کی غرض سے سعودی حکومت نے پالیسی میں تبدیلی لائی ہے ۔ خواتین کیلئے شرائط کو کم کردیا گیا ہے ۔ برسوں سے اس ملک میں سخت ترین سرپرستی کا نظام رائج تھا ۔ اب یہ نظام بتدریج ختم کیا جارہا ہے ۔ خواتین اب اپنے طور پر کاروبار شروع کرسکتی ہیں ۔ حکومت کی پالیسی سے استفادہ کرتے ہوئے ای خدمات حاصل کرسکتی ہیں ۔ سعودی وزارت کامرس اور سرمایہ کاری نے اپنے ویب سائیٹ پر بتایا کہ سعودی عرب کے سرپرستانہ نظام کے تحت خواتین کو اپنے مرد نگرانکار یا سرپرست کی اجازت حاصل کرنے کی تصدیقی سند پیش کرنی ہوتی تھی ۔ عام طور پر شوہر ، والد اور بھائی کی اجازت لینا ضروری تھا لیکن اب ایسا نہیں ہوگا ۔ سعودی حکومت نے خواتین کیلئے روزگار کے مواقع پیدا کردیئے ہیں ۔ ایرپورٹس اور بندرگاہوں پر 140 ایسے شعبے کھول دیئے گئے ہیں جہاں خواتین اپنی تجارت کرسکتے ہیں ۔ اس سلسلے میں اب تک حکومت کو 107000 خواتین کی درخواستیں وصول ہوئی ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT