Thursday , December 14 2017
Home / Top Stories / سعودی شاہی محل پر حملے کے بعد سکیورٹی سخت

سعودی شاہی محل پر حملے کے بعد سکیورٹی سخت

کلاشنوف سے مسلح سعودی شہری کو شاہی گارڈس نے ہلاک کردیا
ریاض ۔ /8 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) سعودی عرب کے شاہی محل پر حملے کے بعد سکیورٹی سخت کردی گئی ہے ۔ یہ حملہ کل ایک ایسے وقت کہا گیا تھا جبکہ سعودی عرب کے شاہ سلمان روس کے دورہ پر تھے ۔ ایک بندوق بردار نے حملے کے فوری بعد سعودی گارڈس کو نشانہ بناکر دو گارڈس کو ہلاک کیا تھا ۔ جدہ کے شاہی محل کے باب الداخلہ پر کئے گئے اس حملے میں دیگر 3 گارڈس زخمی ہوئے ہیں ۔ جوابی کارروائی کرتے ہوئے شاہی گارڈس نے بندوق بردار کو بھی ہلاک کردیا جس کی شناخت 28 سالہ سعودی شہری کی حیثیت سے کی گئی ہے جس کے پاس کلاشنوف اور دیگر 3 گرینائیڈس تھے ۔ اس نوجوان نے شاہی محل کے شاہی گارڈس کی چوکی پر فائرنگ شروع کی جو ہینڈائی کار سے باہر آکر فائرنگ کی تھی ۔ وزارت نے کل بیان میں کہا کہ سکیورٹی گارڈس کی چوکسی کی وجہ سے بڑا حادثہ ٹل گیا ۔ سعودی پریس ایجنسی نے بتایا کہ شاہی گارڈس نے فوری طور پر جوابی کارروائی کرتے ہوئے بزدلانہ حرکت کا جواب دیا جس کے نتیجہ میں شاہی گارڈس کے دو جوان شہید ہوگئے ۔ سعودی عرب میں امریکی سفارتخانہ نے قبل ازیں اپنے شہریوں کو خبردار کردیا تھا کہ وہ اس طرح کے امکانی حملوں سے چوکس رہیں ۔ سعودی عرب میں جاری پولیس سرگرمیوں کے باعث امریکی شہریوں کو مشورہ دیا گیا تھا کہ وہ زیادہ سے زیادہ احتیاط سے کام لیں اور کسی بھی علاقہ کا سفر کرنے سے قبل جائزہ لیں ۔ سفارتخانہ نے اپنے مختصر بیان میں امریکی شہریوں سے کہا تھا کہ سعودی عرب میں حملے کے امکانات پائے جاتے ہیں ۔ یہ وارننگ اس وقت دی گئی تھی جبکہ سعودی پولیس نے اس ہفتہ اسلامک اسٹیٹ گروپ سے وابستہ دہشت گردوں کے ٹھکانوں پر دھاوے کئے تھے جس میں دو افراد ہلاک اور دیگر پانچ گرفتار کئے گئے تھے ۔ 2014 ء سے آئی ایس نے سلسلہ وار دعوی کئے ہیں کہ اس نے سنی اکثریت والے ملک سعودی عرب میں شیعہ اور سکیورٹی فورس کے خلاف بم حملے اور فائرنگ کی ہے ۔ سعودی عرب امریکی زیرقیادت بین الاقوامی اتحاد کا رکن ہے ۔ شام اور عراق میںانتہاپسند گروپ سے محاذ آرا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT