Saturday , December 16 2017
Home / عرب دنیا / سعودی عرب خودکش دھماکے کرنے والے کی تصویر جاری

سعودی عرب خودکش دھماکے کرنے والے کی تصویر جاری

ریاض ۔ 8 اگسٹ ۔(سیاست ڈاٹ کام) جنوبی سوڈان کے شہر ابھا میں ایمرجنسی فورس کی مسجد میں بم دھماکے کی ذمہ داری قبول کرنے کے چوبیس گھنٹے کے اندر اندر انتہا پسند تنظیم ’داعش‘ نے ممکنہ خودکش بمبار ’ابو سنان النجدی‘ کی آڈیو ریکارڈنگ اور تصویر جاری کردی۔داعش نے دعوی کیا کہ ریکارڈ شدہ صوتی پیغام ابھا مسجد میں خودکش حملہ کرنے والے بمبار دہشت گرد کی وصیت ہے، جسے انہوں نے حملے سے قبل ریکارڈ کرایا۔ تنظیم کی ہم خیال ویب سائٹس پر اسی مبینہ وصیت سے شہ سرخیاں جمائی گئی ہیں۔خودکش بمبار کی ریکارڈ شدہ صوتی وصیت اور تصویر ایک ایسے وقت میں جاری کی گئی ہے کہ جب سعودی وزارت داخلہ ان دنوں خودکش بمبار کی شناخت اور جرم کی دوسری تفصیلات کے ثبوت جمع کرنے میں مصروف ہے۔

 

ابھا دھماکہ ‘ بمبار سعودی شہری : وزارت داخلہ
ریاض 8 اگسٹ ( سیاست ڈاٹ کام ) سعودی عرب کی وزارت داخلہ نے آج اعلان کیا کہ شہر ابھا کی پولیس کمپاونڈ میں مسجد میں ہوئے بم دھماکہ کو ایک 21 سالہ سعودی شخص نے انجام دیا تھا ۔ اس بم دھماکہ میں 15 افراد ہلاک ہوگئے تھے ۔ سعودی عرب میں تخریب کارانہ تشدد کا یہ تازہ ترین واقعہ تھا ۔ وزارت داخلہ نے کہا کہ سعودی شہری یوسف السلیمان نے پولیس کمپاونڈ کی مسجد میں یہ حملہ کیا تھا جو صوبہ اسیر کے دارالحکومت ابھا شہر میں واقع ہے ۔ واضح رہے کہ چند گھنٹے قبل ہی دولت اسلامیہ نے ایک مبینہ بمبار کی تصویر اور اس کا آڈیو ٹیپ جاری کیا تھا ۔ داعش نے حملہ آور کو ابو سنان النجدی قرار دیا تھا اور اس کا ایک آڈیو ٹیپ بھی جاری کیا تھا جس میں سعودی حکمرانوں اور فوج کو خبردار کیا گیا تھا کہ اب وہ امن سے نہیں رہ سکیں گے ۔ اس مبینہ آڈیو میں کہا گیا تھا کہ چونکہ سعودی عرب نے عراق و شام میں داعش کے خلاف سرگرم امریکی زیر قیادت فوج میں شمولیت اختیار کی تھی اس لئے یہ حملے کئے جا رہے ہیں۔ سعودی وزارت داخلہ نے اس دھماکہ میں مرنے والے 11 سکیوریٹی اہلکاروں کی بھی شناخت کرلی ہے جبکہ چار دوسرے بنگلہ دیشی ورکرس بتائے گئے ہیں۔ اس دھماکے کے بعد داعش کے حجاز صوبہ نے ذمہ داری قبول کی تھی ۔

TOPPOPULARRECENT