Tuesday , December 18 2018

سعودی عرب میں 11 شہزادوں کی گرفتاری کی توثیق

ریاض ۔ /7 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) سعودی عرب کے اٹارنی جنرل نے مملکت کے کفایتی اقدامات کے خلاف احتجاج کے بعد 11 شہزادوں کی گرفتاری کی توثیق کی اور کہا کہ ’’امن و ضبط عامہ درہم برہم کرنے پر ‘‘ اب وہ مقدمہ کا سامنا کریں گے ۔ سعودی میڈیا نے گزشتہ روز خبر دی تھی کہ یہ شہزادے ریاض کے ایک تاریخی شاہی محل ’’قصرالحکم ‘‘ کے باہر جمع ہوئے تھے اور شاہی خاندان کے ارکان کے پانی اور برقی کے بلس کی ادائیگی بند کرنے حکومت کے فیصلے کے خلاف احتجاج کررہے تھے ۔ یہ شہزادے اپنے ایک چچا زاد کو دی گئی سزائے موت پر معاوضہ کی ادائیگی کا مطالبہ بھی کررہے تھے ۔ اٹارنی جنرل سعود الموجب نے یہ تفصیلات بتاتے ہوئے مزید کہا کہ مذکورہ شہزادہ کو قتل کا مجرم قرار دیتے ہوئے سزائے موت پر تعمیل کی گئی تھی جس میں اس کا سرقلم کردیا گیا تھا ۔ وزارت اطلاعات کیلئے جاری کردہ بیان الموجب نے کہا کہ ’’یہ بتائے جانے کے باوجود بھی کہ ان کے مطالبات غیر قانونی ہیں ۔ 11 شہزادوں نے اس علاقہ سے واپسی سے انکار کے ساتھ امن و ضبط عامہ کو درہم برہم کررہے تھے ۔ گرفتاری کے بعد ان شہزادوں کے خلاف مناسب دفعات کے تحت مقدمات درج کئے گئے ہیں ‘‘ ۔ گرفتار شدہ شہزادوں کو جنوبی ریاض میں واقع الحائر جیل میں بند کریا گیا ہے جہاں اعظم ترین سکیورٹی انتظامات کئے جاتے ہیں ۔ عالمی منڈی میں تیل کی قیمتوں میں کمی کے سبب قومی بجٹ خسارہ میں بھاری اضافہ سے نمٹنے کیلئے سعودی عرب کے مصارف میں کمی اور آمدنی میں اضافہ کے لئے گزشتہ دو سال سے سلسلہ وار کفایتی اقدامات کئے جارہے ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT