Thursday , November 23 2017
Home / Top Stories / سعودی عرب نے قطر سے متصل سرحد کھول دی

سعودی عرب نے قطر سے متصل سرحد کھول دی

عازمین حج کیلئے سہولت ، دونوں ممالک کے شاہی خاندان کا کشیدگی کے بعد پہلی مرتبہ ربط

ریاض ۔ 17 اگست (سیاست ڈاٹ کام) سعودی عرب نے آج کہا کہ وہ قطر سے متصل سرحد کھول رہا ہے تاکہ قطریوں کو حج میں شرکت کا موقع مل سکے جبکہ ایک ماہ طویل کشیدگی پڑوسی ممالک میں برقرار ہے جس کے نتیجہ میں دونوں فریقین حج کو سیاسی رنگ دینے کا ایک دوسرے پر الزام عائد کرتے رہے رتھے۔ یہ فیصلہ سعودی عرب کے ولیعہد شہزادہ محمد بن سلمان کی قطر کے شاہی خاندان کے رکن سے حیرت انگیز ملاقات کے بعد منظرعام پر آیا۔ اس رکن کی خاندان کی شاخ کو 1972ء میں بغاوت کے بعد محل سے بیدخل کردیا گیا تھا۔ وزیرخارجہ قطر شیخ محمد بن عبدالرحمن الثانی نے کہا کہ وہ سعودی فیصلہ کا خیرمقدم کرتے ہیں لیکن اقدامات میں ناکہ بندی کی مکمل برخاستگی بھی شامل ہونا چاہئے۔ وہ سویڈن میں ایک پریس کانفرنس کے دوران سوالوں کے جواب دے رہے تھے۔ سرکاری سعودی خبر رساں ادارہ نے اطلاع دی ہیکہ قطری عازمین حج کو سرزمین مملکت میں داخلہ کی اجازت دی جائے گی۔ اس کے بعد عازمین کو بذریعہ طیارہ دو سعودی ایرپورٹس دمام اور الاحسا سے سعودی عرب کے اخراجات پر منتقل کیا جائے گا۔ شاہ سلمان نے حکم جاری کیا ہیکہ ملک کے فلیگ شپ ایرلائنس کے طیاروں کو قطر کے دارالحکومت دوحہ روانہ کیا جائے تاکہ قطری عازمین حج کو جدہ منتقل کیا جاسکے جو مکہ معظمہ سے قریب ترین شہر ہے۔ ان سب کی میزبانی حج کے اخراجات سعودی عرب برداشت کرے گا۔ سعودی عرب کے سرکاری ٹی وی نے کہا کہ پہلے ہی 100 قطری سرحد پار پہنچ چکے ہیں۔ یہ فیصلہ ولیعہد شہزادہ محمد کی قطر کے شاہی خاندان کے رکن شیخ عبداللہ الثانی سے جدہ میں محل میں ملاقات کے بعد کیا گیا۔ سعودی خبر رساں ادارہ کے بموجب ولیعہد شہزادہ نے جوابی خیرسگالی کا مظاہرہ کرتے ہوئے دونوں شاہی خاندانوں کے درمیان تاریخی روابط کا تذکرہ کیا۔ تاہم یہ واضح نہیں ہوسکا کہ شیخ عبداللہ قطری حکومت کے نمائندہ تھے یا نہیں۔ ان کے دادا، والد اور بھائی قطر کے حکمراں رہ چکے ہیں جبکہ ان کے قبیلہ کو 1972 کی بغاوت میں قصرشاہی سے نکال دیا گیا تھا۔ جدہ میں ملاقات قطر اور سعودی عرب کے درمیان سیاسی صف آرائی کے تقریباً 10 ہفتے بعد ہوئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT