Tuesday , September 25 2018
Home / عرب دنیا / سعودی کی قیادت والے فضائی حملوں میں 85 افراد ہلاک

سعودی کی قیادت والے فضائی حملوں میں 85 افراد ہلاک

ہادی حامی جنگجوؤں نے روسی سفارتخانے اور ہادی کی رہائش گاہ کو حوثیوں سے دوبارہ حاصل کرلیا

ہادی حامی جنگجوؤں نے روسی سفارتخانے اور ہادی کی رہائش گاہ کو حوثیوں سے دوبارہ حاصل کرلیا
عدن ۔ 20 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) یمن میں باغیوں اور حکومت حامی فوجیوں کے درمیان جھڑپوں کے علاوہ سعودی کی قیادت والے فضائی حملوں میں کم و بیش 85 افراد ہلاک ہوگئے۔ میڈیکل اور فوجی ذرائع نے یہ بات بتائی جبکہ سعودی عرب نے اقوام متحدہ کی اپیل پر یمن کو خطیر رقمی امداد دینا بھی منظور کیا ہے۔ اقوام متحدہ کا کہنا ہیکہ گذشتہ دو ہفتوں سے حملوں میں ہوئی شدت کی وجہ سے سینکڑوں افراد ہلاک ہوچکے ہیں جبکہ ہزاروں خاندان وہاں سے تخلیہ کرنے پر مجبور ہوگئے ہیں۔ یاد رہے کہ سعودی کی قیادت والے فضائی حملوں کیلئے یمن کے مفرور صدر منصور ہادی نے درخواست کی تھی۔ کل سے لڑائی صرف چار اہم شہروں پر مرکوز رکھی گئی ہے جبکہ سعودی کی قیادت والے لڑاکا طیارے بھی اب صرف حوثیوں کے ٹھکانوں کو ہی نشانہ بنارہے ہیں۔ سب سے زیادہ ہولناک جھڑپیں دالیہہ شہر میں ہوئی جہاں 31 حوثی اور ہادی کی حمایت کرنے والے 17 فوجی ہلاک ہوئے جبکہ تعز شہر میں صبح کی اولین ساعتوں میں کئے گئے حملوں میں 10 حوثی باغی اور 4 ہادی حامی ملیشیا میں ہلاک ہوئے۔ دارالخلافہ صنعاء کے بعد تعز یمن کا تیسرا سب سے بڑا شہر ہے اس کے علاوہ دوسرے بڑے شہر عدن میں بھی گذشتہ ہفتوں سے حملوں میں شدت پیدا ہوگئی ہے۔ آج بھی سعودی کی قیادت والے لڑاکا طیاروں نے تعز میں حوثی ٹھکانوں کو نشانہ بنایا۔ لڑائی کے اس ماحول میں تعز کی تمام سڑکیں سنسان تھیں، جہاں تمام دکانات بند رکھی گئی تھیں جبکہ جنوبی صوبہ شابواء میں بھی قبائیلیوں کے حملے میں 7 حوثی ہلاک ہوئے جبکہ گذشتہ شب عدن میں گیارہ حوثی اور پانچ ہادی حامی جنگجوؤں کو ہلاک کیا گیا۔ فوجی ذرائع نے یہ بات بتائی۔ ہادی حامی جنگجوؤں نے حوثیوں کے قبضہ سے روس سفارتخانے اور ہادی کی رہائش گاہ کو آزاد کروا لیا ہے۔ یاد رہے کہ گذشتہ سال ستمبر سے باغیوں نے صنعاء پر بغیر کسی مزاحمت کے قبضہ جما رکھا ہے اور اس طرح عربین جزیرہ نما ملک پر اپنے کنٹرول کو توسیع دی ہے۔

TOPPOPULARRECENT