Tuesday , September 25 2018
Home / کھیل کی خبریں / سلمان‘آصف اور محمد عامر کی سزاؤں پرنظرثانی کا امکان

سلمان‘آصف اور محمد عامر کی سزاؤں پرنظرثانی کا امکان

کراچی۔16جنوری (سیاست ڈاٹ کام) برطانیہ میں سلمان بٹ، محمد آصف اور محمد عامر کی سزاؤں کے فیصلے پر نظرثانی کی جائے گی۔صحافی مظہر محمود کی جانب سے مبینہ اسپاٹ اسکینڈل کے فراہم کردہ ثبوتوں پر خدشات کی روشنی میں یہ فیصلہ کیا گیا ہے۔ برطانوی اخبار’’گارجین‘‘ نے انکشاف کیا ہے کہ اسپاٹ فکسنگ کے الزامات پر سزا کا سامنا کرنے والے پاکستانی

کراچی۔16جنوری (سیاست ڈاٹ کام) برطانیہ میں سلمان بٹ، محمد آصف اور محمد عامر کی سزاؤں کے فیصلے پر نظرثانی کی جائے گی۔صحافی مظہر محمود کی جانب سے مبینہ اسپاٹ اسکینڈل کے فراہم کردہ ثبوتوں پر خدشات کی روشنی میں یہ فیصلہ کیا گیا ہے۔ برطانوی اخبار’’گارجین‘‘ نے انکشاف کیا ہے کہ اسپاٹ فکسنگ کے الزامات پر سزا کا سامنا کرنے والے پاکستانی کرکٹ ٹیم کے کھلاڑیوں کے فیصلے کا جائزہ لیا جائے گا۔ 2011 میں تین پاکستانی کھلاڑیوں کو جیل بھیجنے اور قید کی سزا کے فیصلے پر نظر ثانی ان 25 مقدمات میں شامل ہے جنہیں مظہر محمود کی طرف سے فراہم ثبوت پر خدشات کی روشنی میں کراون پراسیکیوشن سروس جائزہ لے رہی ہے۔ پاکستانی کرکٹ ٹیم کے تین کھلاڑی سلمان بٹ، محمد آصف اور محمد عامر کو 2010 میں دورہ انگلینڈ کے دوران اسپاٹ فکسنگ کے الزامات ثابت ہونے پر بالترتریب دس، سات اور پانچ سال کی پابندی لگا دی گئی تھی

اور تینوں کو جیل کی ہوا بھی کھانی پڑی تھی۔ اسپاٹ فکسنگ کے الزام میں عامر پر عائد پانچ سالہ پابندی رواں سال اگست میں ختم ہو گی۔رپورٹ کے مطابق جو لائی میں منشیات کے الزامات پر پاپ اسٹار اور ٹی وی اینکر کے خلاف محمود کی طرف سے پیش ثبوتوں کے خدشات پر کارروائی روک دی گئی تھی۔اس ہفتے کے شروع میں محمود کی طرف سے ایک خفیہ اسٹنگ سے اسپاٹ فکسنگ الزامات کے دوران گرفتار ہونے والے 3 فاسٹ بولروں کے خلاف مزید کارروائی روک دی گئی،انہیں اب کسی کارروائی کا سامنا نہیں کرنا پڑے گا۔ رپورٹ کے مطابق عامر ابھی 22 برس کے ہیں اور ستمبر میں ان کی کرکٹ واپسی ہوگی۔

TOPPOPULARRECENT