Thursday , December 13 2018

سلمان تاثیر کے قاتل ممتاز قادری کی درخواست مسترد

اسلام آباد۔ 11 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان نے جرائم کی تمام وارداتوں میں ملوث سزائے موت پانے والے ملزمین کی سزا پر عمل آوری پر امتناع کو برخاست کردیا ہے اور اس طرح صرف دہشت گردی سے مربوط جرائم کو مستوجب سزائے موت بناتے ہوئے اس قانون کو توسیع دی ہے۔ پشاور کے اسکول میں ہوئے طالبان حملہ کے بعد یہ سخت فیصلہ کیا گیا تھا جہاں طالبان نے 50 مع

اسلام آباد۔ 11 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان نے جرائم کی تمام وارداتوں میں ملوث سزائے موت پانے والے ملزمین کی سزا پر عمل آوری پر امتناع کو برخاست کردیا ہے اور اس طرح صرف دہشت گردی سے مربوط جرائم کو مستوجب سزائے موت بناتے ہوئے اس قانون کو توسیع دی ہے۔ پشاور کے اسکول میں ہوئے طالبان حملہ کے بعد یہ سخت فیصلہ کیا گیا تھا جہاں طالبان نے 50 معصوم اسکولی بچوں کو موت کے گھاٹ اُتار دیا تھا۔ عہدیداروں کے مطابق وزارت داخلہ نے متعلقہ حکام کو ہدایت کی ہے کہ دہشت گردی جرائم میں ملوث سزائے موت پانے والے تمام مجرمین کی سزا پر عمل آوری میں تیزی پیدا کی جائے جن کی جانب سے رحم کے لئے داخل کردہ ہر درحواست مسترد ہوچکی ہے۔ یاد رہے کہ سابق گورنر سلمان تاثیر کے قاتل ممتاز قادری کی جانب سے داخل کردہ درخواست کو مسترد کردیا تھا اور اس فیصلے کے ایک روز بعد عدالت کا یہ نیا فیصلہ منظر عام پر آیا، تاہم نقادوں نے یہ کہہ کر اس فیصلہ کا مضحکہ اُڑا رہا تھا کہ قادری شاید سزائے موت سے بچ جائے گا کیونکہ سزائے موت صرف دہشت گردی معاملات میں ملوث ملزمین کے لئے تفویض کی گئی تھی۔ وزیراعظم نواز شریف نے گزشتہ سال ڈسمبر میں سزائے موت پر عمل آوری کیلئے خود ساختہ امتناع کو برخاست کردیا تھا ۔تاہم نواز شریف کا فیصلہ صرف دہشت گردی میں ملوث ملزمین کے لئے تھا لہذا وزارت داخلہ کی جانب سے بھی جاری کئے گئے ایک بیان میں یہ وضاحت کی کہ اب سزائے موت پانے والے تمام ملزمین (چاہے وہ دہشت گردی میں ملوث ہوں یا پھر کسی اور جرم میں) کی سزائے موت پر عمل آوری کی جائے گی۔

TOPPOPULARRECENT