Wednesday , December 13 2017
Home / کھیل کی خبریں / سلمان کے تقرر پر اسپورٹس برادری کا ملا جلا ردعمل

سلمان کے تقرر پر اسپورٹس برادری کا ملا جلا ردعمل

یوگیشور دت ، ملکھا سنگھ ، دھنراج پلے ناراض، آئی او اے میری کوم ، ابھینو بندراخوش
نئی دہلی۔ 24 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) بالی ووڈ سوپر اسٹار سلمان خاں کو ریو اولمپکس 2016ء میں شرکت کرنے والے ہندوستانی جتھے کا خیرسگالی سفیر مقرر کئے جانے پر اسپورٹس برادری کا ملا جلا ردعمل دیکھا گیا ہے۔ اسٹار ریسلر یوگیشور دت اور افسانوی اسپرنٹر ملکھا سنگھ نے سلمان خاں کے تو تقرر پر سوال اٹھایا ہے لیکن انڈین اولمپک اسوسی ایشن کے علاوہ دیگر چند اسپورٹس شخصیات نے اس تقرر کا خیرمقدم کیا ہے۔ سلمان اپنی آنے والی فلم ’’سلطان‘‘ میں ریسلر کا رول کررہے ہیں، جنہیں انڈین اولمپک اسوسی ایشن نے گزشتہ روز اسٹار خاتون ریسلر میری کوم، ہاکی انڈیا کے کپتان سردار سنگھ، شوٹر اپوروی چندیلہ اور دوسروں کی موجودگی میں ہندوستانی اولمپک جتھے کا خیرسگالی سفیر مقرر کیا تھا جس کا ان تمام نے خیرمقدم کیا تھا۔ یہ عہدہ خود اپنے آپ میں فقیدالمثال ہے۔ ماضی میں کسی گڈ ول ایمبیسڈر کے تقرر کی کوئی نظیر نہیں ملتی لیکن اس عہدہ پر سلمان خاں کے تقرر سے اسپورٹس برادری کی رائے منقسم ہوگئی ہے۔ لندن اولمپکس کے برونز میڈلسٹ یوگیشور دت اور افسانوی اسپرنٹر ملکھا سنگھ اب سلمان کے تقرر کی مخالفت میں سب سے آگے نظر آرہے ہیں لیکن انڈین اولمپک اسوسی ایشن نے اپنے اس فیصلے کی تائید کی ہے۔ ہندوستانی اولمپک اسوسی ایشن کے نائب صدر ترلوچن سنگھ نے کہا کہ ’’ اس اقدام سے ایسی مشہور شخصیات آگے آئیں گی جنہیں عوام پسند کرتے ہیں اور ان کے داخلہ سے عوام بالخصوص نوجوانوں میں اسپورٹس سے دلچسپی میں اضافہ ہوگا‘‘۔ ترلوچن سنگھ نے کہا کہ ’’ہم ان (سلمان خاں) کی مدد لے رہے ہیں۔ ہم انہیں کچھ نہیں دیا ہے۔ آئی او اے انہیں (سلمان کو) ایک پائی بھی ادا نہیں کررہا ہے‘‘۔ قبل ازیں یوگیشور دت نے ہندی زبان میں یہ ٹوئٹر پیغام دیا کہ ’’ہر کسی کو فلمیں فروغ دینے کا حق حاصل ہے،

لیکن اولمپکس، فلموں کو فروغ دینے کا مقام نہیں ہے‘‘۔ یوگیشور نے مزید لکھا کہ ’’کیا کوئی مجھے یہ بتا سکتا ہے کہ اس میں ’’گڈ وَل ایمبیسڈر کا کیا رول ہے آخر کیوں عوام کو بیوقوف بنایا جارہا ہے‘‘۔ ایسا محسوس ہوتا ہے کہ 33 سالہ یوگیشور کا احساس تھا کہ اس عہدہ کے لئے اسپورٹس شخصیات زیادہ موزوں ہوسکتے تھے۔ 1958ء اور 1962ء کے ایشین گیمس گولڈ میڈلسٹ ملکھا سنگھ نے کہا کہ میں سلمان خان کا مخالف نہیں ہوں۔ آئی او اے کا فیصلہ غلط ہے ، حکومت کو مداخلت کے ذریعہ اس فیصلہ پر نظرثانی کرنا چاہئے۔ ہاکی کے سابق اسٹار دھنراج پلے نے بھی ایسے ہی خیالات کا اظہار کیا تاہم میری کوم اور سردار سنگھ نے سلمان خاں کے تقرر کی بھرپور تائید کی اور کہا کہ اس بالی ووڈ اداکار میں زبردست عوامی کشش ہے اور وہ اولمپکس اسپورٹس کے بارے میں شعور بیدار کرسکتے ہیں۔ میری کوم نے کہاکہ ’’ان (سلمان) جیسا ایمبیسڈر ہونا اسپورٹسمین اور اتھیلیٹس کیلئے بہت بہتر ہے‘‘۔ کامن ویلتھ گولڈ میڈلسٹ کرشنا پونیا نے کہا ہے کہ سلمان کی مقبولیت سے کوئی انکار نہیں۔ ہندوستان کے پہلے اور واحد انفرادی اولمپک گولڈ میڈلسٹ شوٹر ابھینو بنڈرا نے بھی سلمان کے تقرر کا خیرمقدم کیا ہے۔ ابھینو نے سلمان اور انڈین اولمپک اسوسی ایشن کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا ہے کہ سلمان کو ایک بھاری ذمہ داری کے ساتھ ایک عظیم اعزاز دیا گیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT